وفاقی حکومت کا کرپشن کی نشاندہی کیلئے ’’وسک بلور‘‘ قانون متعارف کرانے کا اعلان

وفاقی حکومت کا کرپشن کی نشاندہی کیلئے ’’وسک بلور‘‘ قانون متعارف کرانے کا ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) وفاقی حکومت نے کرپشن کی نشاندہی کیلئے وسل بلور قانون متعارف کرانیکا اعلان کر دیا ، وفاقی وزیر قانون بیرسٹر فروغ نسیم نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم وسل بلور قانون متعارف کرنے جا رہے ہیں اس سے پہلے خیبرپختونخوا کا بھی ایک قانون تھا، وسل بلور قانون میں مکمل جدت ہے ، یہ کریمنل لاء سے متعلق ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس پر سیاست نہیں ہونی چاہیے ، صوبوں اور وفاق سب کو خوش دلی سے یہ قانون پاس کرنا چاہیے اور کوشش کریں گے کہ یہ قانون اسی سال پارلیمینٹ میں پیش کیا جائے کیونکہ یہ پاکستان کے حق میں بہت بڑا قدم ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر کوئی بھی وسل بلور کرپشن کی کوئی معلومات دیتا ہے تو پیسوں کی ریکوری میں سے 20فیصد اسے انعام دیا جائے گا جس کی شکایت پر ریکوری ہو گی ، جو بھی شکایت آئے گی اس کے اوپر ایک کمیشن بنے گا جو دیکھے گی کہ شکایت میں جان ہے کہ نہیں پھر وہ کمیشن نیب اور ایف آئی اے کو ریفر کرے گی ۔ فروغ نسیم نے کہا کہ وسل بلور کی شناخت کو تحفظ دیا جائے گا اور اس کا نام صیغہ راز میں رکھا جائے گا اور شکایت کنندہ کمیشن خود بن جائے گا،نیب اور ایف آئی اے کے سامنے بھی وہ کمیشن شکایت کنندہ ہو گا، عوام سے گزارش ہے کہ وہ کرپشن کو روکنے کیلئے حکومت کا ساتھ دے ، ہم نے کرپشن کے خلاف جنگ نہ لڑی تو بہت مشکل ہے، پرانے قانون میں شکایت صرف ادارے کے سربراہ کو جاتی تھی یہاں آزادانہ کمیشن ہوگا ۔ خیبرپختونخوا کا قانون بھی اچھا تھا اس میں کمیشن جاری کرپشن کو روکتا تھا ۔انہوں نے کہا کہ ہم جلد اس قانون کو قومی اور صوبائی اسمبلیوں میں لانے کیلئے کوشاں ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کمیشن کی طاقت سول پروسیجر والی ہوگی جبکہ سی آر پی سی والی طاقت بھی کمیشن کو حاصل ہوگی ، کمیشن کے کم سے کم تین ارکان ہوں گے جبکہ نوعیت دیکھتے ہوئے ممبران کی تعداد زیادہ بھی کی جاسکتی ہے ، ارکان پبلک اور پرائیویٹ دونوں سیکٹر سے لئے جائیں گے اور اچھی شہرت والے لوگوں کو تعینات کیا جائے گا ،جھوٹی شکایت کرنے والوں کیلئے بھی سزا اور جزا کا نظام موجود ہے ،وسل بلور کا نام افشا نہیں ہوگا جب تک کہ وہ خودنہ چاہے،اگر اس کا نام افشاں ہوگیا تو جو بھی ذمہ دار شخص ہوگا اس کے خلاف سزا اور جرمانہ دونوں ہے، کوشش ہے کہ پورے پاکستان کا ایک ہی کمیشن ہو ، نیب کے پاس بے پناہ کام ہے اگر کوئی اور ادارہ کام کرکے دیتا ہے تو اس کا وقت بھی بچے گا ۔

وسل بلور قانون

مزید : صفحہ آخر