پولنگ سٹیشنوں کے اندر فوج کی تعیناتی تشویشناک، پاکستان کے عام انتخابات پہلے سے قدرے بہتر تھے ، یورپی یونین

پولنگ سٹیشنوں کے اندر فوج کی تعیناتی تشویشناک، پاکستان کے عام انتخابات پہلے ...

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) یورپی یونین نے پاکستان کے عام انتخابات 2018کو سابق انتخابات کے مقابلے میں بہتر قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ سیاسی جماعتوں کی جانب سے انتخابی مہم پر حد سے زائد اخراجات،پولنگ سٹیشنوں کے اندر فوج کی تعیناتی ،میڈیا اور اظہار رائے پر پابندی اور سیاسی جماعتوں کی جانب سے امیدواروں کی نامزدگی اورمیڈیا اور اظہار رائے پر پابندیوں کے معاملات تشویشناک ہیں۔جمعہ کے روز اسلام آباد میں یورپی یونین ابزرور مشن کی حتمی رپورٹ برائے 2018انتخابات پیش کرتے ہوئے مشن کے چیف آبزرورمائیکل گیہلرنے کہاکہ حتمی رپور ٹ میں پاکستان میں مشن کی موجودگی کے دوران مشاہدات کے تجزیے اور نتائج کے علاوہ آئندہ عام ا نتخابات کیلئے جامع سفارشات پر بھی شامل ہیں اور ان سفارشات میں متعلقہ اداروں جن میں الیکشن کمیشن ، حکومت پاکستان، قومی اسمبلی ، سیاسی جماعتیں سول سوسائٹی اور دیگر اہم شراکت دار شامل ہیں ۔انہوں نے کہا کہ یورپی یونین آبزرور مشن کی جانب سے عام انتخابات کے بعد دی جانیوالی پچاس اصلاحات میں سے حکومت اور الیکشن کمیشن نے 38اصلاحات کو جزوی یا قلی طور پر نافذ کیا ہے تاہم کئی معاملات ابھی بھی باعث تشویش ہیں جن میں سیاسی جماعتوں کی انتخابی مہم پر حد سے زائد ا خراجات ، امیدواروں کے غیر مبہم اور غیر معروضی معیار انتخابی عمل کے تمام مراحل تک مشاہدہ کاروں کی نامکمل رسائی یکجا انتخابی فہرست کی عدم موجودگی اور میڈیا اور اظہار رائے کی آزادی پر پابندیاں شامل ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہماری رپورٹ رائے دہندگان کی ناکافی تعلیم ، پوسٹل بیلٹ کے ناقص نظام اور حلقہ بندیوں و نتائج کی ترسیل میں شفافیت پر بھی روشنی ڈالتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عام انتخابات کے موقع پر اظہار رائے پر بے جا پابندیوں کے نتیجے میں میڈیا نے قابل ذکر حد تک خود کو سنسر کرنا شروع کردیا اسی طرح بڑے بڑے اجتماعات پر پابندیاں ، پولنگ اسٹیشنز کے اندر مسلح افواج کی موجودگی اور خواتین کی بطور رائے دہندگان و اراکین اسمبلی کی کم نمائندگی جیسے معاملات بھی شامل ہیں ۔انہوں نے کہا کہ رپورٹ میں 30سفارشات پیش کی گئی ہیں جن میں آٹھ سفارشات اہمیت رکھتی ہیں جن کے مطابق انتخابات کے دوران لگنے والی پابندیوں کا دوبارہ آئین و الیکشن ایکٹ کے تحت جائزہ لیا جائے ، الیکشن کمیشن کی شفافیت کو یقینی بنانے کے لئے الیکشن ایکٹ پر نظرثانی کی جائے ، الیکشن سے متعلق عوامی دلچسپی کے معاملات کی آن لائن اشاعت کا طریقہ کارشامل کیا جائے ۔انہوں نے کہاکہ سفارشات میں الیکشن کمیشن پر عوام کا اعتماد بڑھانے کے لئے زور دیا گیا ہے کہ انتخابات کے شراکت داروں کے ساتھ تمام مراحل پر باقاعدہ ملاقاتیں کی جائیں اسی طرح انتخابات کے دوران سکیورٹی اہلکاروں کی موجودگی کو پولنگ اسٹیشن کے باہر تک محدود کیا جائے تاکہ سکیورٹی کی صورتحال کو برقرار رکھا جاسکے ۔

یورپی یونین

مزید : صفحہ اول