کشمیریوں کو ان کی منصفانہ اور جائز جدوجہد میں کبھی بھی تنہا نہیں چھوڑیں گے:فردوس عاشق اعوان

کشمیریوں کو ان کی منصفانہ اور جائز جدوجہد میں کبھی بھی تنہا نہیں چھوڑیں ...
 کشمیریوں کو ان کی منصفانہ اور جائز جدوجہد میں کبھی بھی تنہا نہیں چھوڑیں گے:فردوس عاشق اعوان

  

اسلام آباد(اے پی پی) وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائےاطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق نے کہا ہے کہ پاکستانی عوام کشمیریوں کو ان کی منصفانہ اور جائز جدوجہد میں کبھی بھی تنہا نہیں چھوڑیں گے ،آج کے دن کشمیر ی عوام بھارتی فوج کے کشمیر میں داخل ہونے کے حوالے سے یومسیاہ منا رہے ہیں، پاکستانی قوم کشمیریوں کے کاز کے ساتھ مکمل یکجہتی اورغیر متزلزل حمایت کا اظہار اور ہر قسم کے حالات میں ہر صورت کشمیریوں کابھر پور ساتھ دینے کے عزم کا اعادہ کرتی ہے ۔

27اکتوبر 2019ءکشمیر کے یومسیاہ کے موقع پر اپنے پیغام میں انہوں نے کہا ہے کہ پاکستان اور اس کےعوام کشمیریوں کو ان کی منصفانہ اور جائز جدوجہد میں کبھی بھی تنہا نہیںچھوڑیں گے جو کہ اقوام متحدہ کی منظور شدہ قرار دادوں میں دیئے گئے اپنےحق خود ارادیت کے حصول کے لئے کوشاں ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر بھارتیبربریت اور بہیمانہ مظالم سے بھر پور کہانی ہے،بد قسمتی سے بڑے افسوس کی بات ہےکہ بھارت نےاپنےوعدے پورے کرنے یاان کی تجدید نو کی بجائے وادی بھر میں دہشت گردی کا بازار گرم کر رکھا ہے۔معاون خصوصی نے کہا کہکشمیر کے عوام نے 1989ءمیں جب اپنی تحریک آزادی شروع کی تو اس وقت سے لےکر اب تک مقبوضہ کشمیر میں ایک لاکھ سے زائد کشمیری شہید ہو چکے ہیں جبکہہزاروں خواتین کی عصمت دری کی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارت کی تمامحکومتیں بندوق کی نوک پر کشمیریوں کی آزادی کی تحریک کو دبانے کی کوششکرتی رہی ہیں تاہم مودی کی حکومت نے بھارتی آئین کا آرٹیکل 370اور 35اے

منسوخ کر دیا جس میں کشمیر کو خصوصی حیثیت دی گئی تھی اس طرح مودی حکومتمظالم میں مزید آگے چلی گئی ہے۔ ڈاکٹرفردوس عاشق اعوان نے کہا کہ بھارتی

حکومت کا یہ یکطرفہ اقدام درحقیقت اقوام متحدہ کی قرار دادوں کی نفی ہےاور یہ دونوں ممالک کے درمیان کشمیر کے تنازعہ کو حل کرنے کے لئے ہونےوالے دو طرفہ معاہدوں کی بھی خلاف ورزی ہے اور یہ عالمی برادری کے ضمیرکا بھی امتحان ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کو مقبوضہ کشمیر میں 5اگست کےاقدام کے بعد پیدا ہونے والی خطرناک صورتحال پر بڑی تشویش ہے جہاں پر80لاکھ کشمیریوں کو محاصرہ میں رکھا گیا ہے اور مواصلاتی روابط مکمل طورپر منقطع ہونے کے باوجود وہاں سے بہیمانہ اور وحشیانہ مظالم کی اطلاعاتموصول ہو رہی ہیں جو بین الاقوامی میڈیا کے ذریعے مل رہی ہیں ۔ انہوں نےکہا کہ مقبوضہ کشمیر میں خوراک ، روز مرہ کی اشیائے خورد و نوش اور حتیکہ بچوں کے لئے دودھ تک دستیاب نہیں ہے،بھارتی قیادت آر ایس ایس کےفاشسٹ نظریہ کی متولی بنی ہوئی ہے اور اسے کشمیری عوام کے مصائب اورمشکلات کا ذرا بھربھی احساس نہیں،مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی بریطرح پامالی سے پیدا شدہ تشویشناک صورتحال سے خطہ بھر کے امن اور سلامتیکو سنگین خطرات لاحق ہو گئے ہیں،وزیرا عظم عمران خان نےاقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اور عالمی برادری سے خطاب میں اقوام متحدہ اور عالمی رہنماؤں کو بھی اس تمام ترصورتحال سےآگاہ کیا۔انہوں نےکہاکہ یہی و ہ وقت ہےکہ عالمی برادری اورانسانی کاز کےچیمپئنزکہلانےپرفخر کرنےوالےممالک مظلوم کشمیریوں کو ان کا حق خود ارادیت دلانے میں اپناکردار اداکریں اور بھارتی حکومت پر دباﺅ ڈالیں کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کامحاصرہ ختم کرے ، کشمیریوں کا قتل عام بندکرے اور بھارت کشمیر کے مسئلہکو اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق حل کرے ۔

مزید :

قومی -