لاک ڈاؤن کو 83روز مکمل،آزاد و جموں کشمیر سمیت پاکستان بھر میں آج ”یوم سیاہ“علی گیلانی کی وادی میں ہڑتال کی کال

  لاک ڈاؤن کو 83روز مکمل،آزاد و جموں کشمیر سمیت پاکستان بھر میں آج ”یوم ...

  

  اسلام آباد،سرینگر (آئی این پی)مقبوضہ وادی میں لاک ڈاؤن کا 83 واں روز مکمل ہوگئے، کشمیریوں کا رابطہ بیرونی دنیا سے منقطع ہے، کرفیو کے باوجود جگہ جگہ احتجاج جاری ہے۔کشمیری 5 اگست سے گھروں میں قید ہیں، کھانے پینے کی اشیاء کی شدید قلت اور ادویات کا سٹاک بھی ختم ہوگیا۔ کمیونی کیشن بلیک آؤٹ ہونے کی وجہ سے کشمیریوں کا رابطہ بیرونی دنیا سے منقطع ہے، سخت ترین کرفیو کے باوجود کشمیری احتجاج کر رہے ہیں۔ مقبوضہ کشمیرکے عوام سے اظہاریکجہتی کیلئے (آج)اتوار کو ملک بھرمیں اوربین الاقوامی سطح پر یوم سیاہ منایا جائے گا۔وزارت داخلہ کے نوٹیفکیشن کے مطابق یوم سیاہ منانے کامقصدبھارتی حکومت کے مظالم کاشکار کشمیریوں کی حالت زار پرانکے ساتھ یکجہتی کااظہارکرناہے۔حکومت نے یہ دن منانے کیلئے جامع پروگرام ترتیب دیاہے جس میں آزادی کی جدوجہد کرنیوالے کشمیریوں کودبانے کیلئے بھارتی فوج کی جانب سے کئے جانیوالے مظالم اور بڑے پیمانے پرانسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بے نقاب کی جائینگی۔آزادجموں وکشمیراور گلگت بلتستان سمیت ملک بھرمیں ضلع اورتحصیل کی سطح پرعوامی اجتماعات، ریلیاں،واکس اوراحتجاجی مظاہرے کئے جا ئیں گے۔ادھرکل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سیدعلی گیلانی نے کل پورے مقبوضہ کشمیرمیں مکمل ہڑتال کی اپیل کی ہے تاکہ بھارت کو واضح اوراعلانیہ پیغام دیاجاسکے کہ کشمیریوں نے اپنے وطن پر بھارت کے غیرقانونی قبضے کومسترد کردیا ہے۔ 27اکتوبر 1947 ء کوبھارتی فوج نے جموں وکشمیر پر چڑھائی کی اوربرصغیرکی تقسیم کے منصوبے کی صریحا خلاف ورزی کرتے ہوئے کشمیری عوام کی امنگوں کے برعکس کشمیرپرقبضہ کرلیا۔ 27اکتو بر کشمیر کی تاریخ کا سیاہ ترین دن ہے،تاریخ شاہد ہے کسی بھی قوم کو طویل عرصے تک ظالمانہ ہتھکنڈوں کے ذریعے محکوم نہیں رکھا جاسکاہے،کشمیری عوام کسی بھی صورت میں بھارت کے غیر قانونی تسلط کو ہرگز قبول نہیں کریں گے۔

یوم سیاہ 

مزید :

صفحہ اول -