نواز شریف کی صحت پر حکام کو فوری نوٹس لینا چاہئے تھا، اسحق ڈار

نواز شریف کی صحت پر حکام کو فوری نوٹس لینا چاہئے تھا، اسحق ڈار

  

لندن (آئی این پی)مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما اور سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے حکومت کونوازشریف کی بیماری کو سنجیدگی سے نہ لینے پرشدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ نوازشریف کی صحت پر حکام کو فوری نوٹس لینا چاہیے تھا،صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے اپنی غفلت کو تسلیم کیا ، میاں صاحب کیلئے آواز اٹھانے پر میڈیا اور سوشل میڈیا کے شکر گزار ہیں، ڈاکٹر عدنان، علی ڈار اور میرے ٹوئٹ کرنے کے بعد لاہور کی عوام باہر نکلی، میڈیکل رپورٹس کے مطابق نواز شریف کی قوت مدافعت نہ ہونے کے برابر ہے، قوم میاں نواز شریف کی جلد صحت یابی کیلئے دعا کرے۔ہفتہ کو ایک ٹی وی انٹرویو میں اسحاق ڈار نے کہا کہ میاں نواز شریف کی صورتحال ویسے تو بہتر ہے لیکن طبی طور پر ان کی حالت تشویشناک ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر عدنان، علی ڈار اور میرے ٹوئٹ کرنے کے بعد لاہور کی عوام باہر نکلی میاں صاحب کے لئے آواز اٹھانے پر میڈیا اور سوشل میڈیا کے شکر گزار ہیں۔ نواز شریف کو تین میگا یونٹ پلیٹلیٹس بڑھانے کے لئے لگائے گئے تھے۔ ان کے پلیٹلیٹس صبح کے وقت 30 ہزار سے اوپر چلے گئے تھے۔ لیکن دوپہر کے وقت یہ دوبارہ سات ہزار پر آگئے جو کافی پریشانی کا باعث تھا۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری رپورٹ کے مطابق پنجاب حکومت نے کراچی سے کچھ میڈیکل کے ماہرین بلوائے تھے انہوں نے بتایا ہے کہ میاں نواز شریف کی قوت مدافعت نہ ہونے کے برابر ہے جس کی وجہ سے ان کے پلیٹلیٹس دوبارہ کم ہوئے ہیں۔ اسحاق ڈار نے کہا کہ صوبائی وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے تسلیم کیا ہے کہ ہفتے والے دن انہیں یہ اطلاع دی گئی کہ نوازشریف صاحب کے پلیٹلیٹس 75 ہزار تک آچکے ہیں تو طبی طور پر تمام حکام کو فوری طورپر الرٹ ہونا چاہیے تھا اور ایکشن لینا چاہیے تھا۔ اتوار کو جب نواز شریف کے دوبارہ پلیٹلیٹس چیک کئے گئے تو وہ 16 ہزار تک آ چکے تھے اور اس وقت تک وہ کوٹ لکھپت جیل میں موجود تھے۔۔ اسحاق ڈار نے قوم سے میاں نواز شریف کی جلد صحت یابی کی دعا کی۔

اسحاق ڈار

مزید :

صفحہ آخر -