مقبوضہ کشمیر میں جہاد اور فوج داخل کرنے کی باتیں کرنیوالے کشمیریوں اور پاکستان کے ساتھ دشمنی کررہے ہیں، وزیر اعظم

مقبوضہ کشمیر میں جہاد اور فوج داخل کرنے کی باتیں کرنیوالے کشمیریوں اور ...
مقبوضہ کشمیر میں جہاد اور فوج داخل کرنے کی باتیں کرنیوالے کشمیریوں اور پاکستان کے ساتھ دشمنی کررہے ہیں، وزیر اعظم

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ پاکستانی قوم کشمیریوں کے ساتھ ہے ، مقبوضہ کشمیر میں جہاد اور فوج داخل کرنے کی باتیں کرنے والے کشمیریوں کے ساتھ ساتھ پاکستان کے ساتھ بھی دشمنی کررہے ہیں۔

یوم سیاہ کے موقع پر کشمیریوں اورقوم کے نام اپنے پیغام میں وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ آج وہ سیا دن ہے جب مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیں داخل ہوئیں تھیں، کشمیری لوگوں سے جھوٹے وعدے اوردھوکا کیا گیا ۔ان کا کہنا تھا کہ 72سال پہلے بھارتی فوجیں مقبوضہ کشمیر میں داخل ہوئیںاور 30سال پہلے بھی ایک دھاندلی زدہ انتخاب ہوا تھا۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی جانب سے کشمیریوں کویہ حق دیا گیا کہ پاکستان یابھارت کے ساتھ جائیں لیکن بھارت نے کشمیریوں کے ساتھ دھوکا کیا ۔وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ آزادی کی جنگ میں ایک لاکھ کشمیری شہید ہوچکے ہیں ، مودی نے دوسری بار الیکشن جیت کر مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت تبدیل کرکے کرفیو لگادیا جس سے پتہ نہیں کہ کشمیر کے اندر صورتحال کیاہے ؟ تھوڑی بہت خبریں نکلتی ہیں جن سے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کے بارے میں پتہ چلتاہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ میں کشمیر کے لوگوں کو پیغام دیتا ہوں کہ سارا پاکستان کشمیر کے ساتھ کھڑا ہے ، ہم ہمیشہ آپ کے ساتھ کھڑے رہیں گے ۔ وزیر اعظم نے کہاہے کہ میں نے دنیا کے بڑے بڑے لیڈروں کو بتایاہے کہ کشمیر میں کیاظلم ہورہاہے ؟ پاکستان ہر فورم پر کشمیر یوں کی سپورٹ کرے گا ۔ انہوں نے کہا کہ میں قوم کوبتانا چاہتا ہوں کہ میں یہ بیان سنتا ہوں کہ کشمیر میں جہاد اور پاکستانی فوج کوجانا چاہئے لیکن یہ بات کررہے ہیں وہ کشمیریوں کے ساتھ دشمنی کررہے ہیں اور پاکستان کے ساتھ بھی دشمنی کررہے ہیں۔ مودی حکومت کسی واقعہ کوبہانہ بنا کر کشمیریوں پر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑنا چاہتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے کشمیر میں نو لاکھ فوج دہشت گردی کے خلاف نہیں رکھی ہوئی بلکہ کشمیریوں کے خلاف دہشت گردی کرنے کیلئے رکھی ہوئی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ مودی توچاہتا ہی یہی ہے کہ کوئی ایسی حرکت کی جائے تواس کو بنیادبناکر پاکستان کو دنیا میں دہشت گردی کی پشت پناہی کرنے والا ظاہر کیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ اگر کو ئی ایسا واقعہ ہوتاہے تو بھارت کشمیریوں پر مزید ظلم کرے گا ۔ انہوں نے کہا کہ میں کشمیریوں کاسفیر ہوں ، وکیل بھی اور ترجمان ہوں ، کشمیریوں کو یقین دلاتا ہوں جب تک ان کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق ان کاحق نہیں ملتا ، میں ان کے لئے جدوجہد کرتا رہوں گا ۔ انہوں نے کہا کہ مودی نے مقبوضہ کشمیر میں الیکشن کروائے جن کامکمل بائیکاٹ کیاگیا ، کنٹرولڈانتخابات کے باوجود بھی پی جے پی کوبری طرح شکست ہوئی ہے۔ مودی نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت ختم کرنے کا یہ اقدام کشمیریوں کی خوشحالی کیلئے کیاگیاہے ، اگر مودی سمجھتاہے کہ یہ اقدام کشمیریوں کی خوشحالی کیلئے ہے تو پھر وہ مقبوضہ کشمیر میں ریفرنڈم کروادے پتہ چل جائے گا کہ کہاں کھڑا ہے ؟انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ میں میری تقریری سے دنیا کو پتہ چل گیا کہ کشمیر میں کیا ہورہاہے ؟ مودی حکومت چاہتی ہی یہی ہے کہ کسی طرح پاکستان کوذمہ دار ٹھہرائے ، یوم سیاہ منانے کا مقصد کشمیریوں کوپیغام دیناہے کہ پاکستانی قوم ان کے ساتھ ہے ، چاروں صوبے اور اقلیتیں کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہیں۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -