پشاور کے مدرسے میں کس طرح کا دھماکہ کیا گیا اور کیا چیز استعمال کی گئی ؟ ابتدائی تحقیقات میں مزید پہلو سامنے آ گئے 

پشاور کے مدرسے میں کس طرح کا دھماکہ کیا گیا اور کیا چیز استعمال کی گئی ؟ ...
پشاور کے مدرسے میں کس طرح کا دھماکہ کیا گیا اور کیا چیز استعمال کی گئی ؟ ابتدائی تحقیقات میں مزید پہلو سامنے آ گئے 

  

پشاور (ڈیلی پاکستان آن لائن )پشاور کے علاقے دیر کالونی میں واقع مدرسے میں بم دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں سات بچے شہید ہو گئے ہیں جبکہ 50 سے زائد زخمی وہیں جبکہ متعدد کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے ۔

ایس ایس پی آپریشنز کا کہناہے کہ موقع سے شواہدا کھٹے کیے جارہے ہیں اور زخمیوں کو ہسپتال منتقل کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے ، ابتدائی تفتیش میں بات سامنے آئی ہے کہ دھماکہ ” آئی ای ڈی “ تھا جس میں پانچ سے چھ کلو بارودی مواد استعمال کیا گیا تھا ۔پولیس حکام کا یہ بھی کہنا ہے کہ دھماکہ ” ٹائم بم “ کے ذریعے کیا گیاہے ۔بم میں بال بیئرنگ بھی استعمال کیے گئے ہیں ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق دھماکامدرسہ کے مرکزی ہال میں ہوا،دھماکے کی اطلاع ملتے ہی ریسکیو ٹیمیں اور پولیس دھماکے کی جگہ پر پہنچ گئیں اور علاقے کو گھیرے میں لے کر امدادی کارروائیاں شروع کردیں۔

ایس پی سٹی وقار عظیم کاکہناہے کہ دھماکے کے وقت بچے حصول تعلیم میں مصروف تھے، ایک شخص نے مدرسہ میں بارودی موادسے بھرابیگ رکھا، مشکوک شخص صبح 8 بجے مدرسہ میں داخل ہوا،دھماکا خیز مواد پھٹنے سے بچوں سمیت 7 افراد شہید ہو گئے جبکہ70 کے قریب زخمی ہیں،زخمیوں میں متعددبچوں کی حالت تشویشناک ہے، زخمیوں میں زیادہ ترافرادجھلسے ہوئے ہیں،زخمی بچوں کی عمریں 11 سے 17 سال کے درمیان ہیں ، مدرسے میں داخل ہونے والے مشکوک شخص کی تلاش جاری ہے۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -