کشمیر سنٹر لاہور کے زیر اہتمام پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ 

کشمیر سنٹر لاہور کے زیر اہتمام پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ 
کشمیر سنٹر لاہور کے زیر اہتمام پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)کشمیریوں کو حق خودارادیت کے علاوہ کچھ قبول نہیں۔ یہ حق اقوام متحدہ، عالمی برادری اور خود بھارت نے بھی تسلیم کررکھا ہے۔ بھارت نے 27اکتوبر1947ءکو کشمیر پر جابرانہ اور ظالمانہ تسلط جمایاجس کے خلاف کشمیری پون صدی سے جدوجہد رکھے ہیں.

تفصیلات کے مطابق کشمیر سنٹر لاہور کے زیر اہتمام پریس کلب لاہور کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔مظاہرے میں انچارج کشمیر سنٹر لاہور سردار ساجد محمود، رہنما مسلم لیگ ن غلام عباس میر،نصیب اللہ گردیزی ، و دیگر سیاسی جماعتوں کے رہنماﺅں اور کارکنوں نے شرکت کی۔ مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے سردارساجد محمود نے کہا کہ کشمیریوں نے پون صدی تک اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ہے اور وہ آزادی کے حصول کے لیے اب بھی کسی قسم کی قربانی سے گریز نہیں کریں گے۔ انہوںنے کہا کہ ہماری آخری منزل بھارت سے آزادی اور پاکستان کے ساتھ الحاق ہے۔ اس کے علاوہ ہمیں کوئی دوسری چیز قبول نہیں۔

غلام عباس میر نے کہا کہ اس سے دنیا کو معلوم ہوجاناچاہیے کہ کشمیری اور پاکستانی یک قالب دوجان ہیں۔ کشمیری صرف اپنی آزادی ہی نہیں تکمیل پاکستان کی جنگ بھی لڑرہے ہیں۔

احسان اللہ تبسم نے کہا کہ ہم شہداءکے خون سے کسی صورت غداری نہیں کریں گے ۔ کشمیریوں نے اپنے بچوں اور اپنے جوانوں کی جانیں اور خواتین نے اپنی عزتوں کی قربانی اس لیے دی ہے کہ وہ کشمیر کو بھارت کے غاصبانہ قبضے سے چھڑا کر آزادی حاصل کریں ۔ بھارت نے اگر کشمیر پر اپنا قبضہ ختم نہ کیا تو وہ خود ٹوٹ کر بکھر جائے گا۔ 

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -