عمران نیازی خطرناک کھیل، کھیل رہے ہیں: شہباز شریف

  عمران نیازی خطرناک کھیل، کھیل رہے ہیں: شہباز شریف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


           لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے عمران نیازی خطرناک کھیل، کھیل رہا  ہے، بے بنیاد الزام تراشی کی بجائے  جوڈیشل کمیشن کی تحقیقات کے نتائج کا انتظار کیا جائے۔ بدھ کو اپنے ٹوئٹ میں وزیراعظم شہباز شریف نے کہا عمران نیازی ارشد شریف کے اندوہناک قتل کو اپنی گھٹیا سیاست کیلئے استعمال کر رہا ہے اور ریاستی اداروں پر شکوک و شبہات کا اظہار کر رہا ہے۔ عمران خان کو صبر سے کام لینا چاہئے اور بے بنیاد الزامات عائد کرنے کی بجائے جوڈیشل کمیشن کی تحقیقات کے نتائج کا انتظار کرنا چاہیے۔ جموں و کشمیر کے تنازع کا واحد حل کشمیریوں کی خواہشات اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق آزادانہ اور غیر جانبدارانہ استصواب رائے ہے،  5 اگست 2019 کے غیر قانونی اور یکطرفہ اقدام سے صورتحال مزید بگڑ گئی ہے، تمام تر مشکلات کے باوجود بہادر کشمیری بے مثا ل قربانیوں کے ذریعے بھارتی جارحیت کا مقابلہ کر رہے ہیں، ہم کشمیری عوام کو حق خود ارادیت کا جائز حق ملنے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ یوم سیاہ کشمیر کے موقع پراپنے پیغام میں وزیراعظم نے کہا آج بوجھل دل کیساتھ ہم کشمیر کے حوالہ سے ایک اور یوم سیاہ منا رہے ہیں، 27 اکتوبر 1947 کو 75 سال پہلے بھارت نے زبردستی اپنی فوجیں غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر تسلط مقبوضہ جموں و کشمیر میں اتار دی تھیں اور تب سے وہ اس علاقے پر زبردستی اور غیر قانونی طور پر  قبضہ جاری رکھے ہوئے ہے۔ مقبوضہ جموں و کشمیر پر اپنے زبردستی قبضے کو برقرار رکھنے کیلئے بھارت نے علاقے میں 9 لاکھ سے زیادہ مسلح فوجی تعینات کر رکھے ہیں۔ تشدد، غیر قانونی نظربندیاں، جھوٹے مقدمات میں ملوث کرنے، کالے قوانین کے تحت طاقت کے اندھا دھند استعمال اور کشمیریوں کی الگ ثقافتی اور مذہبی شناخت ختم کرنے کیلئے منظم کارروائیاں مقبوضہ علاقے پر بھارت کے ظالمانہ قبضے کی حقیقت کی نشاندہی کرتی ہیں۔ 5 اگست 2019 کو بھارت کی جانب سے مقبوضہ جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت کو غیر قانونی اور یکطرفہ طریقہ سے ختم کرنے کے بعد سے صورتحال مزید بگڑ گئی ہے، گزشتہ تین سالوں میں بھارتی قابض افواج کے ہاتھوں تقریباً690 بے گناہ کشمیریوں کا ماورائے عدالت قتل کیا گیا ہے،ممتاز حریت رہنماغیر قانونی طور پر زیر حراست یا گھروں میں نظر بند ہیں۔ بھارت جعلی ڈومیسائل کے اجرا،جائیداد کے قوانین میں تبدیلی، انتخابی اضلاع میں تبدیلی، ہندو اکثریتی علاقوں کیلئے ریاستی اسمبلی میں نئی نشستیں پیدا کرنے اور غیر کشمیری باشندوں کے نام انتخابی فہرستوں میں شامل کر کے مقبوضہ جموں و کشمیر میں آبادی کے تناسب میں تبدیلی کیلئے قابل مذمت اقدامات کر رہا ہے۔ تمام تر مشکلات کے باوجود بہادر کشمیری بے مثال قربانیوں اور محکومی سے انکار کرتے ہوئے بھارتی جارحیت کا مقابلہ کررہے ہیں۔ تاریخ اس حقیقت کی گواہ ہے کہ بھارتی حکومت کی طرف سے مقبوضہ جموں و کشمیر کے عوام، پاکستان اور عالمی برادری سے سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں کی پاسدا ری اور اپنے وعدوں پر عملدرآمد کرنے سے قابض طاقتیں انکاری ہیں۔ انہوں نے کہا تاریخ اس بات کی بھی گواہ ہے کہ بھارت نے ہمیشہ غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کیا اور اپنے وعدوں کی پاسداری کو مکمل طور پر جھٹلایا۔ جموں و کشمیر کا تنازع ساڑھے سات عشرے سے زیادہ عرصہ سے اقوام متحدہ کے ایجنڈے پر ہے، پاکستان کشمیریوں کیساتھ اپنے وعدوں پر قائم اور اس نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کیخلاف پر مسلسل آواز بلند کی ہے۔ پاکستان عالمی برادری پر مسلسل زور دیتا رہا ہے کہ وہ مقبوضہ جموں و کشمیر کے مسئلہ پر اپنا کردار ادااور ذمہ داری پوری کرے، پاکستان نے مقبوضہ علاقے میں بھارتی مظا لم کیخلاف مسلسل آواز اٹھائی اور 5 اگست 2019 کے بھارتی حکومت کے غیر قانونی اور یکطرفہ اقدامات کو فوری طور پر واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ جموں و کشمیر کے تنازع کا واحد حل اس بات کو یقینی بنانے میں مضمر ہے کہ کشمیریوں کو ان کی خواہشات اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق اقوام متحدہ کے مینڈیٹ، آزادانہ اور غیر جانبدارانہ استصواب رائے کے جمہوری عمل کے ذریعے اپنے حق خودا ر ا د یت کے استعمال کرنے کی اجازت دی جائے۔ کشمیر کاز کے حوالے سے پاکستان اپنی بھرپور حمایت جاری رکھے ہوئے ہے، ہمارا سب سے بڑا اثاثہ اس بنیادی مسئلے پر قومی اتفاق رائے ہے۔ 
وزیر اعظم

مزید :

صفحہ اول -