اسرائیل کی 2008-09ءمیں عالمی قوانین کی شدید خلاف ورزیاں‘ اقوام متحدہ

اسرائیل کی 2008-09ءمیں عالمی قوانین کی شدید خلاف ورزیاں‘ اقوام متحدہ

جنیوا (اے پی پی) اقوام متحدہ کی ڈپٹی ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق کیونگ ووکانگ نے کہا ہے کہ اسرائیلی حکومت نے انسانی حقوق اور عالمی قوانین کی شدید خلاف ورزیاں کی ہیں، مگر ابھی تک ذمہ داروں کا تعین نہیں کیا گیا، تین برس گزرنے کے باوجود اقوام متحدہ مشن کی رپورٹ پر کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق کیونگ وہ کانگ نے جنیوا میں اقوام متحدہ کی کونسل برائے انسانی حقوق میں اپنی تفصیلی رپورٹ پیش کی ہے جس میں اسرائیلی حکومت کی جانب سے ہونے والی انسانی حقوق اور عالمی قوانین کی خلاف ورزیوں کی تفصیلات بیان کی گئی ہیں۔ جن میں یو این کی جانب سے تشکیل دیئے گئے فیکٹ فائنڈنگ مشن کی وہ رپورٹ بھی شامل جو 1400 فلسطینیوں کے قتل کے متعلق ہے۔ اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 2008ءاور 2009ءکے دوران اسرائیلی حکومت نے 1400 فلسطینی شہریوں کو قتل کیا تھا۔ ان واقعات پر مبنی فیکٹ فائنڈنگ مشن رپورٹ کو اقوام متحدہ نے دستاویزی شکل دی اور شہریوں کے قتل میں ملوث ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی سفارش بھی کی ہے۔ا

مزید : عالمی منظر