پانچ سوٹن ایل پی جی درآمد کی جائیگی: ملک خدابخش

پانچ سوٹن ایل پی جی درآمد کی جائیگی: ملک خدابخش

کراچی(اکنامک رپورٹر)وفاق ایوانہائے صنعت وتجارت پاکستان کی قائمہ کمیٹی برائے ایل پی جی کے چیئرمین ملک خدابخش نے کہاہے کہ ایل پی جی ،سی این جی اور پیٹرولیم مصنوعات آٹوفیول کو ایک چھت تلے فراہم کرنے کے لیے پانچ سوٹن ایل پی جی درآمد کی جائیگی جو گیس کے متبادل کے طور پر800تا1000 ایم ایم سی ایف ٹی کی کمی کو پوراکریگی،حکومت سی این جی سیکٹر سمیت ایل پی جی میں لگائے جانے والی سرمایہ کاری کو محفوظ بنانے کے اقدامات کرے، ملک میں گیس کی قلت کو دورکرنے کے لیے 3 ہزار ایک سو 72 اسٹیشنز پر ایل پی جی کو بھی فروخت کیا جاسکتا ہے یہ بات انہوںنے ایل پی جی کی قائمہ کمیٹی کے دوسرے اجلاس کے موقع پر متفقہ طورپر منظورکیے جانے والے نکات پر کہی۔ اس موقع پر پی ایس او،ایس ایس جی سی ،ایل پی جی کے عہدیداران،ایف پی سی سی آئی کے نائب صدر داوداقبال پاک والا نے بھی ملک میںگیس کی قلت اور دیگر وسائل کو بروئے کارلانے کے لیے اپنے خیالات سے آگاہ کیا۔ملک خدابخش نے کہا کہ ملک میں ایل پی جی کی درآمدات کو اوپن رکھا جائے اور ایل پی جی فروخت کرنے والوں کو ایل پی جی درآمدکرنے کی اجازت فراہم کی جائے تاکہ پاکستان میں فری مارکیٹ کو فروغ دیا جاسکے اور حکومتی آٹوفیول ایل پی جی پالیسی کو تقویت فراہم کی جاسکے ۔انہوںنے کہا کہ ملک میں اسٹیک ہولڈرز اور مارکیٹنگ کمپنیوں کی سرمایہ کاری کو محفوظ بنانے کی اشد ضرورت ہے اور پیٹرولیم پالیسی کو 20سال تک کے لیے مرتب کیا جائے ۔ملک خدابخش نے کہا کہ ایل پی جی ،سی این جی اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کے تعین کامیکنزم بنایا جائے جسکے تحت اوگرا کو صرف ریگولیٹری اتھارٹی کے طورپرکام کرنے دیا جائے اور قیمتوں کا تعین پیداواری لاگت کے بعد کیا جائے تاکہ عوام کو سستا آٹوفیول میسر آسکے ۔انہوںنے کہا کہ ایل پی جی پیٹرولیم مصنوعات کے مقابلے میں 30فیصد کم نرخوں پر دستیاب ہوسکتی ہے اور مستقبل میں ایل پی جی ،سی این جی کے ذریعے ہی آٹوفیول کوفروغ دیا جاسکتا ہے ۔ملک خدابخش نے کہا کہ مارکیٹنگ کمپنیوں کی بلیک مارکیٹنگ ،ملک میں کوٹے کی تقسیم کرپشن کوفروغ دینے کاباعث بنتی ہے لہذا بین الاقوامی اسٹینڈرڈ کو مدنظررکھتے ہوئے تحفظ،آئی ایس او آئیسولیشن اور دیگر تمام اسٹینڈرڈ رکھنے والے اسٹیشنز کو ایل پی جی لگانے کا لائنس فراہم کیا جائے تاکہ موناپالی کا خاتمہ کیاجاسکے ۔اس موقع پرنائب صدر ایف پی سی سی آئی اقبال پاک والا نے کہا کہ دنیا کے بیشترممالک میں ایل پی جی کو بطورآٹوگیس استعمال کرنے کی تیاریاں کی جارہی ہیں اور پاکستان میں گیس کی قلت کے باعث ایل پی جی کو بھی بطورآٹوگیس متعارف کرایا جائے تاکہ عوام کو سی این جی کے مقابلے میں متبادل فیول دستیاب ہوسکے۔انہوںنے

مزید : کامرس


loading...