سارک وزرائے داخلہ اجلاس گستاخانہ فلم کیخلاف رحمان ملک کی پیش کردہ قرار داد متفقہ طور پر منظور

سارک وزرائے داخلہ اجلاس گستاخانہ فلم کیخلاف رحمان ملک کی پیش کردہ قرار داد ...

مالے (ثناءنیوز ) سارک ممالک کے وزراء داخلہ کے اجلاس میں گستاخانہ فلم کے خلاف وزیر داخلہ رحمان ملک کی جانب سے پیش کردہ قرار داد کو متفقہ طور پر منظور کر لیا گیا ۔ قرار داد کو قانون سازی کے لئے اقوام متحدہ میں بھی پیش کیا جا سکتا ہے جبکہ وزیر داخلہ رحمان ملک نے کہا ہے کہ میں جلد بھارت کا دورہ کروں گا ۔ ممبئی حملوں کے حوالہ سے پاکستان کا دوسرا جوڈیشل کمیشن جبکہ بھارت کا دورہ کرے گا ۔ ویزہ پالیسی بنا کر جلد پاکستان اور بھارت اس کا اعلان کریں گے ۔ سارک پول بنانے پر میری تجویز منظور کر لی گئی ۔ سائبر کرائمز کو روکنے کے لئے جلد سارک کی سطح پر اجلاس ہو گا ۔ رحمان ملک نے سرکاری ٹی وی سے گفتگو میں کہا کہ میں قوم کو مبارک باد دیتا ہوں کہ ہم نے ایک بڑے فورم پر توہین آمیز فلم کے خلاف قرار داد منظور کروائی ہے ۔ اس قرار داد کو ہم اقوام متحدہ میں قانون سازی کے لئے بھی ریفرنس کے طور پرپیش کر سکتے ہیں ۔ بھارتی وزیر داخلہ نے ملاقات کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ یہ بڑی اچھی رہی ۔ ہم دونوں کے دہشت گردی اور مذہب کے غلط استعمال پر متفقہ خیالات تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے دونوں ممالک کے درمیان ویزہ معاہدہ پر ویزہ پالیسی بنانے پر اتفاق کیا اور دونوں ممالک اس پالیسی کا ایک ہی دن اعلان کریں گے ۔ رحمان ملک نے کہا کہ دہشت گردی کے مسئلہ پر مل کر بات چیت کرنے پر اتفاق کیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ بارڈر کی خلاف ورزی پر بھی بات ہوئی ۔ ہم نے یہ فیصلہ کیا کہ جو ادارے اس مسئلہ پر کام کرتے ہیں ۔ ان کی ملاقات ہونی چاہئے تاکہ وہ نشاندہی کریں کے خلاف ورزی کہاں سے ہوتی ہے اور ہوتی بھی ہے کہ نہیں ۔ اگر ہوتی ہے تو اس کو روکنے کے لئے کیا اقدامات کئے جا سکتے ہیں ۔ہم نے فیصلہ کیا کہ مل جل کر کام کریں گے اور جو کوئی مسئلہ درپیش آئے گا اس کو دوطرفہ طور پر حل کریں گے ہمارے درمیان رابطہ کا نظام بہت بہتر ہونا چاہئے ۔ بنیادی طور پر دونوں ملک چاہتے ہیں ۔

مزید : صفحہ اول