بجلی کا شارٹ فال ، وزیر اعظم سیکرٹری پانی و بجلی پر برس پڑے

بجلی کا شارٹ فال ، وزیر اعظم سیکرٹری پانی و بجلی پر برس پڑے

 اسلام آباد(این این آئی) وفاقی کابینہ نے قومی ماحولیاتی پالیسی کی منظوری دے دی ہے جبکہ وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ توانائی بحران کا حل ایک مشکل ہدف ہے،حکومت سنجیدہ اقدامات کر رہی ہے۔ وفاقی کابینہ کا اجلاس بد ھ کو وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کی زیر صدارت اسلام آباد میں ہوا۔ متحدہ قومی موومنٹ کے ارکان نے اجلاس میں شرکت نہیں کی ¾ وفاقی وزراءفاروق ستار اور بابر غوری غیر ملکی دورے کے باعث اجلاس میں شریک نہ ہوئے۔ اجلاس میں توانائی بحران، بجلی و گیس کی لوڈشیڈنگ کے حل کیلئے اقدامات پر غور کیا گیا۔ وفاقی کابینہ نے فنانس ڈویژن سے متعلق اپنے فیصلوں پر عملدرآمد کے حوالے سے بھی جائزہ لیا۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کابینہ اجلاس میں توانائی بحران پر سیکرٹری پانی و بجلی پر برس پڑے۔اجلاس کے دور ان وزیر اعظم نے توانائی کمیٹی کی بریفنگ کے دوران سیکرٹری پانی و بجلی کی سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ ستمبر، اکتوبر میں پانی اور گیس کی قلت نہ ہونے کے باوجود بجلی کا شارٹ فال بلاجواز ہے، نقائص اور کوتاہیاں فوری دور کی جائیں ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے لوڈ شیڈنگ پر قابو پانے کےلئے آئندہ ہفتے خصوصی اجلاس طلب کر لیا۔ کابینہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے یوم عشق رسول صلی اللہ علیہ وسلم پر ہونے والے ہنگاموں پر افسوس کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے گستاخانہ فلم کے خلاف پر تشدد مظاہروں کو روکنے کی کوشش ہماری امن پسند فطرت کا ثبوت ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ گستاخانہ فلم کے خلاف قومی سطح پر احتجاج ریکارڈ کرانے والا پاکستان پہلا ملک ہے۔ انہوں نے اقوام متحدہ پر زور دیا کہ ایسی قانون سازی کی جائے جس کے ذریعے کسی کے مذہب کا مذاق اڑانے والے شخص کو سخت سے سخت سزا دی جاسکے۔ انہوں نے سانحہ بلدیہ ٹاﺅن میں سینکڑوں افراد کی ہلاکت کو پاکستانی صنعت کی تاریخ میں بدترین آفت قرار دیا۔

مزید : صفحہ اول