محتسب پنجاب کے حکم پر ملازمین کی 819 بیوگان کو گرپ انشورنس کی 18 کروڑ روپے سے زائد کی ادائیگی شروع

محتسب پنجاب کے حکم پر ملازمین کی 819 بیوگان کو گرپ انشورنس کی 18 کروڑ روپے سے ...

لاہور (پ ر) محتسب پنجاب خالد محمود کے حکم پر پنجاب حکومت اور سٹیٹ لائف کارپوریشن کے درمیان سرکاری ملازمین کی گروپ انشورنس کے لیے معاہدے میں ترمیم کردی گئی ہے جس کی رو سے 60 سال کی عمر سے پہلے طبی بنیادوں پر ریٹائرمنٹ کے بعد وفات پانے والے سرکاری ملازمین کے لواحقین کو پھر سے گروپ انشورنس کی رقم ادا کی جاسکے گی۔ محتسب پنجاب کے حکم کے بعد 2007ءسے لیکر اب تک پنجاب حکومت کے سرکاری ملازمین کی 819 بیوگان کو گروپ انشورنس کی مد میں 18 کروڑ روپے سے زائد کی ادائیگیاں بھی شروع کردی گئی ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت اور سٹیٹ لائف کارپوریشن کے درمیان 2007ءمیں ہونے والے معاہدے میں 60 سال کی عمر تک پہنچنے سے پہلے طبی بنیادوں پرریٹائر ہوکر وفات پانے والے ملازمین کے لواحقین کو گروپ انشورنس سے محروم کردیا گیا تھا حالانکہ متعلقہ سرکاری ملازمین اپنی ملازمت کے دوران گروپ انشورنس کیلئے سٹیٹ لائف کارپوریشن کو ہر ماہ ایک مخصوص رقم بھی جمع کراتے رہے تھے۔ محتسب پنجاب نے یہ حکم 2007ءمیں ریٹائرمنٹ کے بعد وفات پانے والے محکمہ تعلیم نارووال کے ملازم سلامت مسیح کی بیوہ مسمات وکٹوریہ کی درخواست پر جاری کیا جس نے محتسب پنجاب سے درخواست کی تھی کہ اس کا شوہر 2007ءمیں 56 سال کی عمرمیں طبی بنیادوں پر ریٹائر ہوکر انتقال کرگیا لیکن پنجاب حکومت اس کی گروپ انشورنس کی رقم محص اس لئے منظور کرنے سے انکاری ہے کہ سٹیٹ لائف کے ساتھ معاہدے میں طبی بنیادوں پر ریٹائر ہوکر فوت ہونے والے سرکاری ملازمین کیلئے گروپ انشورنس کی ادائیگی کی شق ختم کردی گئی تھی۔ محتسب پنجاب خالد محمود نے کنسلٹنٹ محتسب رضا مہدی کو معاملے کی انکوائری کرکے سلامت مسیح کے لواحقین کو ان کا جائز حق دلوانے کی ہدایت کی ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1