میٹروبس منصوبہ 12پارکنگ پلازوں کی تعمیر میں رکاوٹ بن گیا

میٹروبس منصوبہ 12پارکنگ پلازوں کی تعمیر میں رکاوٹ بن گیا

لاہور (نیوز رپورٹر) میٹرو بس منصوبہ لاہور کے 12پارکنگ پلازوں کی تعمیر کی راہ میں رکاوٹ بن گیا، صوبائی حکومت کی طرف سے پارکنگ پلازوں کی تعمیر کا ٹاسک ٹیپا کو سونپا گیا لیکن ایک طرف بجٹ کی دستیابی کا مسئلہ تو دوسری طرف ٹیپاکی تمام تر توجہ میٹر وبس منصوبے پر مبذول ہونے کی وجہ سے پارکنگ پلازوں کی تعمیرغیر معینہ مدت تک لٹک گئی ہے،معلوم ہوا ہے کہ لاہور میں لبرٹی کارپارکنگ پلازے کی تعمیر کے موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب نے اعلان کیا کہ شہر میں ٹریفک کے مسائل کو حل کرنے اور عوامی سہولت کے پیش نظر مزید 12 کار پارکنگ پلازے تعمیر کیے جائینگے،اس سلسلے میں حکومت پنجاب نے ایل ڈی اے کے ذیلی شعبہ ٹیپاکو نئے پارکنگ پلازوں کی تعمیر کا کام سونپا،اور ایل ڈی اے و ٹیپا نے پنجاب حکومت کی منظوری کے بعد مون مارکیٹ علامہ اقبال ٹاﺅن ‘ نیلا گنبد‘ انار کلی ‘شاہ عالمی‘ضلع کچہری‘ لبرٹی مارکیٹ ‘ماڈل ٹاﺅن موڑ‘اچھرہ‘ بیرون مستی گیٹ ‘ بیرون لوہاری گیٹ‘ ریلوے سٹیشن اور بیرون موچی گیٹ کے علاقوں میں پارکنگ پلازے تعمیر کرنے کے لیے جگہوں کی نشاندہی کی ،قبل ازیں لاہور میں لبرٹی چوک میں تعمیر کئے جانے والے لاہور کے پہلے پارک اینڈ رائیڈ پلازہ نے کام شروع کر دیا ہے یہ 11 منزلہ پلازہ تین کنال 17مرلے اراضی پر 67کروڑ70لاکھ روپے کی لاگت سے مین بلیوارڈ گلبرگ پر تعمیر کیا گیا ہے۔ عمارت کے بیسمنٹ ‘ گراﺅنڈ اور فرسٹ فلور پر80 دکانیں تعمیر کی گئی ہیں جبکہ دیگر آٹھ منزلیں گاڑیوں کی پارکنگ کے لئے زیر استعمال ہیں۔ یہاں اوسطاً 12 گھنٹے پارکنگ کے لئے 308 گاڑیاںکھڑی کی جا سکتی ہیں، مذکورہ پلازے کے بعد علامہ اقبال ٹاﺅن میں مون مارکیٹ کے علاقے میں 80کروڑ روپے کی لاگت سے پارکنگ پلازہ زیر تعمیر ہے ،10منزلہ اس پلازے کے گراﺅنڈ اور پہلے فلور پر 67دوکانیں تعمیر کی جائینگی جبکہ دیگر فلور گاڑیاں پارک کرنے کے لیے استعمال کئے جائینگے اور پلازے میں مجموعی طورپر 350سے زائد گاڑیاں کھڑی کرنے کی گنجائش ہوگی،لیکن دیگر 11 پلازوں کی تعمیر کا کام غیر معینہ مدت تک لٹک گیا ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ پلازوں کی تعمیر میں بنیادی رکاوٹ میٹر و بس روٹ ہے، کیونکہ مذکورہ منصوبے کی تکمیل کے لیے ایک طرف صوبائی حکومت کے دیگر منصوبے فنڈز کے انتظار میں لٹک رہے ہیں تو دوسری طرف ٹیپاکی تمام تر توجہ اس منصوبے پر ہے اور ٹیپا اپنے دیگر کسی بھی منصوبے پر توجہ نہیں دے پارہی،جس کے باعث ٹیپاکے دیگر تمام منصوبے التوا کا شکار ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1