پبلک سروس کمیشن میں بھی ”ریوڑیاں“بانٹی گئیں،نیب نے ریکارڈ قبضے میں لے لیا

پبلک سروس کمیشن میں بھی ”ریوڑیاں“بانٹی گئیں،نیب نے ریکارڈ قبضے میں لے لیا
پبلک سروس کمیشن میں بھی ”ریوڑیاں“بانٹی گئیں،نیب نے ریکارڈ قبضے میں لے لیا

  


کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک) نیشنل اکاﺅنٹی بیلٹی بیورو (نیب) نے پبلک سروس کمیشن بلوچستان میں من پسند افراد کو نوکریاں دینے کا نوٹس لیتے ہوئے 2009 ءسے اب تک کا ریکارڈ قبضے میں لے لیا ہے۔ جیو نیوز کے مطابق بلوچستان پبلک سروس کمیشن کے چیئرمین نے 18 ستمبر کو دو بیٹیوں اور 25 ستمبر کو بیٹے کی تعیناتی کی جبکہ ہیڈمسٹریس اور سینئر ٹیچرز کی نوکریاں بھی رشتے داروں میں ہی بانٹ دی ہیں۔میڈیا پر خبر نشر ہونے کے بعد نیب حکام نے کارروائی کرتے ہوئے پبلک سروس کمیشن کا ریکارڈ قبضے میں لے لیا جس پر یہ انکشاف ہوا کہ چیئرمین نے اپنی دو بیٹیوں عذرا مگسی اور عابدہ زمان کو18 ستمبر کو تعینات کیا جبکہ اپنے بیٹے کو 25 ستمبر کو تعینات کیا، قرة العین مگسی بھی چیئرمین کی قریبی رشتے دار ہیں، مصباح فاطمہ، ڈپٹی ڈائریکٹر امتحانات وحید احمد کی رشتہ دار ہیں۔ دو روز قبل سیکشن آفیسرز کی 13 اسامیوں کیلئے کامیاب ہونے والے تمام لوگ ڈپٹی ڈائریکٹر کے قریبی رشتہ دار نکلے جس پر نیب نے نوٹس لیا اور چھاپہ مارا۔

مزید : کوئٹہ