گھریلو ناچاقی پر لڑکی نے گھر چھوڑ دیا”پاکستان “نے دارالامان بھیجواءدیا

گھریلو ناچاقی پر لڑکی نے گھر چھوڑ دیا”پاکستان “نے دارالامان بھیجواءدیا

  



لاہور (لیڈی رپورٹر) صوبائی دارلحکومت کے علاقہ مرغزار کالونی کی رہائشی23سالہ سدرہ شفیق گھریلو ناچاقی کے باعث روزنامہ ”پاکستان“ مدد کے لئے پہنچ گئی، جہاں اس کی خواہش کے مطابق اسے ”دارالامان“ بھیج دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز سدرہ شفیق روزنامہ ”پاکستان“ کے دفتر آئی اور مدد کے لئے درخواست کی۔ سدرہ نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ وہ ایف اے کی طالبہ ہے اور پڑھنے کا شوق ہے، لیکن والدین اُس کی شادی بڑی عمر کے مرد سے کرنا چاہتے تھے جس کی وجہ سے وہ گھر سے بھاگ آئی ہے اس نے کہا کہ جب مَیں نے شادی سے انکار کیا تو میرے والدین نے مجھے مارا پیٹا اور قتل کرنے کی دھمکیاں دیںمجھے کمرے میں بند کر کے رکھا گیا مجھے دو دو دن کھانا نہیں دیا جاتا تھا میری تعلیم بھی بند کروا دی اور گھر کے افراد نے میرے ساتھ بول چال بھی بند کر دی اور مجھے طعنے دیئے جاتے کے میرا چال چلن ٹھیک نہیں ہے اُن کے اس ناروا سلوک کی بنیاد پر مَیں موقع پا کر گھر سے بھاگ آئی ہوں سدرہ نے مزید بتایا کہ اُس کے چھ بہن بھائی ہیں اور والد انجینئر ہیں، والدین کا رویہ بھائیوں کے ساتھ اچھا ہے جبکہ ہمارے ساتھ بُرا رویہ برتا جا رہا ہے اس کی وجہ سے مَیں بھاگ آئی ہوں اور اب دارالامان بھجوا دیا گیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...