سوئی گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے صنعتیں بحران کا شکارہوں گی،راجہ عدیل

سوئی گیس کی قیمتوں میں اضافہ سے صنعتیں بحران کا شکارہوں گی،راجہ عدیل

  



 لاہور(پ ر)تاجر رہنمانومنتخب ایگزیکٹو ممبرلاہور چیمبرز آف کامر س وانجمن تاجران لوہا مارکیٹ شہید گنج (لنڈا بازار)لاہورکے سینئر نائب صدر راجہ عدیل نے سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ سیس کو غیر قانونی قرار دیئے جانے کے بعد صدارتی آرڈینینس کے ذریعے اس کے دوبارہ نفاذ پر تشویش کا اظہار رکرتے ہوئے کہا ہے کہ جی آئی ڈی سی کے نفاذ پر صنعتکا روں اور تاجروں کے تحفظات ہے سپریم کورٹ آف پاکستان بھی اپنے فیصلہ میں واضح طور پر لکھ چکی ہے کہ گیس انفرانسٹرکچر ڈویلپمنٹ سیس کا شمار ٹیکس میں نہیں ہوتا مگر اس کے باوجود مزید ریونیو کے حصول کیلئے ایف بی آر نے اپنا شارٹ فال کو پورا کرنے کیلئے سیس کو ٹیکس ریونیو ٹارگٹ میں شامل کرلیا ۔

۔

۔

ہے اور آرڈینیس کے نفاذ کے ساتھ ہی عوام پر29ارب کا اضافی بوجھ ڈال دیا ہے راجہ عدیل نے کہا کہ سوئی گیس پاکستان کے قدرتی وسائل سے حاصل ہورہی ہے اس کی قیمتوں میں آئے روز اضافہ اور ٹیکس کے نفاذ سے صنعتیں بحران کا شکار ہونگی ان کی پیداواری لاگت میں اضافہ ہوگا جس کے باعث مہنگائی بڑھے گی اور عوام براہ راست متاثر ہوگی انہوں نے کہا کہ صنعتکاروں کے شدید احتجاج اور مطالبہ پر وزیر خزانہ ایک بار اس ٹیکس کو واپس لے چکے ہیں لیکن دوباہ اس ٹیکس کے نفاذ سے صنعتیں بحران کا شکار ہوجائیں گی اس لیے حکومت اگر صنعتی فروغ چاہتی ہے تو فی الفور جی آئی ڈی سی کو واپس لے تاکہ حکومت کا صنعتی ترقی کا خواب شرمندہ تعبیر ہوسکے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...