محمود الرشید نے خیبرپختونخوا حکومت کےخلاف وائٹ پیپر شرمناک قرار دیدیا

محمود الرشید نے خیبرپختونخوا حکومت کےخلاف وائٹ پیپر شرمناک قرار دیدیا

  



لاہور( نمائندہ خصوصی)قائد حزب اختلاف پنجاب و تحریک انصاف کی کور کمیٹی کے ممبر میاں محمود الرشید نے وفاقی حکومت کی طرف سے خیبرپختونخوا کی حکومت کے خلاف وائٹ پیپر کو شرمناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ صوبوں کے درمیان اتحاد و یکجہتی کو فروغ دینے کی بجائے مرکزی حکومت الزام تراشی کر کے صوبائی تعصب اور نفرت کو ہوا دے رہی ہے، وفاقی حکومت خیبرپختونخوا کے غیور عوام کے مینڈیٹ کی توہین کرنے سے باز آ جائے ،وفاقی وزراءبتائیں کہ انسانیت کی دشمن پنجاب حکومت کے خلاف ”بلیک پیپر “کب جاری ہورہا ہے؟گزشتہ روز انہوں نے اپنے پبلک سیکرٹریٹ میں اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وفاق اور صوبے کے حکمران تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا یہ چیلنج قبول کریں کہ دونوں صوبوں میں 10,10 منصوبوں کا تھرڈ پارٹی آڈٹ کروالیا جائے تو دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائیگا، انہوں نے کہا کہ پنجاب کے 30ارب روپے کے سستی روٹی پروجیکٹ کا تاحال صرف 33فیصد آڈٹ ہوا بقیہ 67فیصد کا ریکارڈ ہی فراہم نہیں کیا گیا، 33فیصد کے آڈٹ پر سوا ارب روپے کی بے ضابطگیاں سامنے آئیں، اسی طرح ضلعی حکومتوں کو دئیے جانے والے 150ارب روپے کا آج تک آڈٹ نہیں ہوا ،آشیانہ ، لیپ ٹاپ اور میٹرو بس پروجیکٹ کا مطالبہ کے باوجود تھرڈ پارٹی آڈٹ نہیں کروایا گیا، انہوں نے کہا کہ جن کے اپنے دامن میں سو چھید ہوں وہ دوسروں پر انگلی اٹھاتے اچھے نہیں لگتے، انہوں نے کہا کہ ن لیگ عمران خان کی دشمنی میں آئین، قانون اور اخلاقیات کی ہر حد عبور کر رہی ہے، ن لیگ کی یہ روایت رہی ہے کہ یہ جب صوبے میں برسراقتدار ہوتی ہے تو وفاقی حکومت کے خلاف سازشیں کرتی ہے اور جب وفاق میں برسراقتدار ہو تو چھوٹے صوبوں پر حملے کرتی ہے،اس الزام تراشی سے یہ بات بھی ثابت ہو گئی کہ وفاقی حکومت کو مذاکرات سے کوئی دلچسپی نہیں،”مودی سرکار “ سے متاثر نواز حکومت کی پالیسی بھی بغل میں چھری اور منہ میں رام رام والی ہے ۔

محمود الرشید

مزید : صفحہ آخر


loading...