ایم کیو ایم ریڈ زون میں دھرنا دے تو کیا فوج حرکت میں نہیں آئیگی؟الطاف حسین ،آرمی چیف 14سوالات

ایم کیو ایم ریڈ زون میں دھرنا دے تو کیا فوج حرکت میں نہیں آئیگی؟الطاف حسین ...

  



                                     لندن خصوصی رپورٹ)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے اپنی پارٹی کے دفاتر پر حملوں اور گرفتاریوں کے حوالے سے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف سے 14سوالات کئے ہیں۔ ایک بیان میں انہوں نے آرمی چیف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے آپ کو سب سے بڑا منصب اور طاقتور عہدہ عطا فرمایا اور فوج اتحاد کی علامت ہوتی ہے۔الطاف حسین کا کہناتھا کہ رینجرز آپریشن میں ایم کیوایم کے گرفتار کارکنوں میں سے 41لا پتہ ہیں ، ان کے سوالات چھاپوں کے دوران میں بیہودہ اور غیر قانونی طرز عمل سے متعلق ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ تشدد سے کارکنان کو ہلاک کرنے والے کتنے افسروں اور سپاہیوں کو سزا دی گئی ، میرے بھائی اور بھتیجے کو کس قصور اور جرم میں گولیاں مار کر قتل کیا گیا، سیاسی انتقامی کارروائی کے تحت قتل کرنے کا لائسنس کوئی بھی حکومت نہیں دیتی، ہم مہاجروں کو آخری بار بتایا جائے کہ ہم کیا کریں؟ سب لٹانے کے باوجود ہمارے لئے آج تک اپنائیت یا قبولیت کیوں نہ آسکی؟ چند گندی مچھلیاں ہی تالاب کو گندا کرتی ہیں۔الطاف حسین نے کہا کہ 40دن ہو گئے کچھ جماعتوں کو ریڈ زون میں جانے اور دھرنے کی اجازت ہے ، ماورائے عدالت قتل، چھاپوں ، گرفتاریوں کا مرکز صرف ایم کیو ایم کو کیوں بنایا گیا ہے؟ انہوں نے آرمی چیف سے پوچھا کہ ایم کیو ایم اسلام آباد ریڈ زون میں دھرنا دے تو فوج، رینجرز حرکت میں تو نہیں آئیں گی؟ پی ٹی وی پر حملہ، توڑ پھوڑ، کیمرے لے جانے والوں کے خلاف رینجرز حرکت میں کیوں نہیں آئی؟ملکی بقا ، فوج سے تعاون کے لئے 1لاکھ ساتھیوں کی پیشکش کوئی اور لیڈر یا جماعت نہیں کر سکی۔ الطاف حسین کا کہنا ہے کہ یہ سوالات مہاجر بزرگ، ماﺅں، بیٹیوں ، نوجوانوں اور بچوں کی آواز ہیں۔ متحدہ کے قائد کا کہنا تھا کہ 19جون 1992 کیاآپریشن میں ان کی پارٹی کا سامان آج تک واپس کیوں نہیں کیا گیا ؟ تحویل میں لئے گئے سامان میں ویڈیوز ، آڈیوز ، تصویریں اور لٹریچر شامل تھا۔ 72بڑی مچھلیوں کے خلاف کارروائی کے نام پر آپریشن کا رخ ایم کیو ایم کے خلاف موڑا گیا؟

مزید : صفحہ اول


loading...