وزیر اعظم بنا تو بیرون ملک دوروں پر سفارت خانے میں ٹھہروں گا ،عمران خان

وزیر اعظم بنا تو بیرون ملک دوروں پر سفارت خانے میں ٹھہروں گا ،عمران خان ...

  



                   اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ میں دھرنے میں شامل لوگوں کو سلام پیش کرتا ہوں، آپ کا پیغام پور ے ملک میں جا چکا ہے اور اتوار کے روز لاہور بھی اپنا فیصلہ دینے جا رہا ہے، جب لاہور جاگ جاتا ہے تو پورا ملک جاگ جاتا ہے، اس دن مینار پاکستان پر عوام کا سمند ہو گا اور ہم سب سے بڑے جلسے کا اپنا ہی ریکارڈ توڑیں گے۔ ڈی چوک میں دھرنے سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ آج نواز شریف عوام پر قرضوں کا بوجھ ڈال کر امریکہ جا چکے ہیں، ان کو ملک کی غریب عوام کا کوئی احساس نہیں ہے ، وہاں مہنگے ترین ہوٹلوں میں قیام کر کے عوام کو بتا رہے ہیں کہ انہیں واقعی ان کا کوئی احساس نہیں ہے ، دوسری جانب نواز شریف کے صرف 16ماہ کے اقتدار میں ہی ہر پاکستانی پر 65 ہزار روپے قرضے کا اضافہ ہو گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اصلی لندن پلان چارٹر آف ڈیموکرسی تھا جس کے تحت نواز شریف اور خورشید شاہ نے آپس میں مل کر نیب کا سربراہ تعینات کیا ہے جو ان کے خلاف قائم تمام مقدمات کو ختم کروا رہے ہیں اور اس عوام کی لوٹی ہوتی دولت ان کو واپس دلوانے کی بجائے اس چوروں کا ساتھ دے رہے ہیں، ہماری حکومت آئی تو ان سب کا احتساب کریں گے اور ان مگر مچھوں کو جیلوں میں ڈالیں گے۔ کپتان نے اعلان کیا کہ جب نیا پاکستان بنے گا تو اس ملک میں انصاف کا نظام رائج ہو گا، ہم خود بھی ٹیکس دیں گے اور سادگی اختیار کریں گے، ہمارے وزراءبھی ٹیکس دیا کریں گے، ہم بیرون ملک دورے نہیں کریں گے اور اگر کریں گے تو وزیر اعظم عمران خان پاکستانی سفارت خانے میں رہے گا، ہم اس عوام کی حالت بدلیں اور بیرون ملک سے لوگ یہاں آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ نئے پاکستان میں عدلیہ اور پولیس کی تنخواہیں بڑھائیں گے تا کہ کوئی بھی ان کو خرید نہ سکے، آج ہم محسوس کرتے ہیں کہ اس اسمبلی میں جا کر ہم اس حکومت کا مقابلہ نہیں کر سکتے کیونکہ یہ نظام ہی کرپٹ ہو چکا ہے اور اس میں بہتری کی گنجائش نہیں ہے ، اس نظام کو ختم کر کے نیا نظام لانا ہو گا۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کو اس ملک کی غیریب عوام کا کوئی احساس نہیں ہے ، اگر انہیں ذرا بھی احساس ہوتا تو امریکہ فتح کرنے نہیں جاتے۔

مزید : صفحہ اول