بھوجا طیارہ کیس، حادثے کی وجہ ناقص جہاز، کاک پٹ کریو ہے: رپورٹ

بھوجا طیارہ کیس، حادثے کی وجہ ناقص جہاز، کاک پٹ کریو ہے: رپورٹ
بھوجا طیارہ کیس، حادثے کی وجہ ناقص جہاز، کاک پٹ کریو ہے: رپورٹ

  



اسلام آباد (ویب ڈیسک) بھوجا ایئر طیارہ حادثہ کیس کی جوڈیشنل انکوائری رپورٹ اسلام آباد ہائی کورٹ میں پیش کردی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ رپورٹ میں حادثے کی ذمہ داری جہاز کے کاک پٹ کریو، بھوجا ایئر کی 80 فیصد شیئر کی مالک انتظامیہ، طیارے کا نقص ہونا، سول ایوی ایشن اتھارٹی جبکہ 20 فیصد شیئر کے مالک چیئرمین فاروق بھوجا کو بری الذمہ قرار دیا ہے۔ رپورٹ میں حیرت انگیز طور پر ذمہ داروں کے خلاف کوئی کارروائی کرنے کی سفارش اور جاں بحق ہونے والوں کو کتنا معاوجہ دیا جانا چاہیے اس کا کوئی زکر نہیں ہے۔ مقامی اخبار کو ملنے والی 138 صفحات پر مشتمل رپورٹ کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں جاں بحق ہونے والے مسافروں کے آٹھ لواحقین نے پٹیشن نمبر 2574/2012 دائر کی تھی جس میں استدعا کی گئی تھی کہ حادثے کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے اور معقول معاوضہ ادا کیا جائے۔ اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایک دو رکنی کمیشن کمیشن جسکے سربراہ جسٹس ریٹائرڈ غلام ربانی اور ایئر وائس مارشل فیض عامر تھے، مذکورہ کمیشن نے 9 ماہ کی تحقیقات کے بعد اپنی رپورٹ جمع کروائی ہے ۔

مزید : اسلام آباد


loading...