کام چور ڈاکیادس سال تک ڈاک اپنے پاس دبا کر بیٹھا رہا

کام چور ڈاکیادس سال تک ڈاک اپنے پاس دبا کر بیٹھا رہا
کام چور ڈاکیادس سال تک ڈاک اپنے پاس دبا کر بیٹھا رہا

  



نیویارک (نیوز ڈیسک) اگر آپ دنیا کے کام چور ترین ڈاکیے سے ملنا چاہتے ہیں تو یہ صاحب امریکہ میں رہتے ہیں اور انہوں نے پچھلے 9 سال سے ڈاک لوگوں تک پہنچانے کی بجائے اپنے گھر جمع کرنے کا کام شروع کررکھا تھا اور اب تک 40 ہزار خطوط اپنے گھر پہنچا چکے ہیں۔ جوزف بروکاٹو کی عمر 67 سال ہے اور وہ نیویارک کے علاقہ بروکلین میں تعینات تھے۔ جوزف کے افسر نے جب اس کی گاڑی میں کچھ پرانے خطوط دیکھے تو اسے شک پڑگیا جس پر تحقیقات کا آغاز کردیا گیا۔ جب حقائق سامنے آئے تو پولیس سمیت ہر سننے والا حیران رہ گیا کہ موصوف تقریباً ایک دہائی سے خطوط متعلقہ لوگوں تک پہنچانے کی بجائے اپنے گھر لے جاکر ذخیرہ کرتے جارہے تھے۔ گھر کی تلاشی پر 40 ہزار سے زائد خطوط برآمد ہوئے۔ جوزف نے مجسٹریٹ کے سامنے بیان دیا کہ وہ ذہنی پریشانیوں کا شمار ہے جس پر مجسٹریٹ نے اسے شراب نوشی کم کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے ذاتی ضمانت پر رہا کردیا ہے۔ اسے نوکری سے معطل کردیا گیا ہے اور قانونی کارروائی جاری ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...