وہ وقت جب صدام حسین نے اپنے خون سے قرآن پاک لکھوایا، ایک انتہائی عجیب و غریب واقعہ

وہ وقت جب صدام حسین نے اپنے خون سے قرآن پاک لکھوایا، ایک انتہائی عجیب و غریب ...
وہ وقت جب صدام حسین نے اپنے خون سے قرآن پاک لکھوایا، ایک انتہائی عجیب و غریب واقعہ

  

بغداد (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق عراقی صدر صدام حسین کے متعلق طرح طرح کی داستانیں دنیا میں مشہور ہیں لیکن ایک خاص واقعے کے متعلق دنیا میں بہت کم لوگ آگاہی رکھتے ہیں۔ یہ سال 2000 کی بات ہے کہ برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی نے انکشاف کیا کہ صدام حسین نے قرآن مجید کا ایک مکمل نسخہ اپنے خون سے لکھوایا تھا۔

بی بی سی کے مطابق عراقی صدر نے اپنی 60 ویں سالگرہ کے موقع پر حکم دیا کہ ان کے خون سے قرآن مجید لکھا جائے۔ عراقی ٹی وی اور اخبارات کے حوالے سے بتایا گیا کہ صدام حسین نے یہ خصوصی نسخہ اظہار تشکر کے طور پر تیار کروایا۔ میڈیا کو جاری کئے گئے ایک خط میں انہوں نے لکھا کہ ان کی زندگی انتہائی خطرناک حالات میں حادثات سے مقابلہ کرتے ہوئے گزری تھی اور اس دوران ان کا بہت سا خون بہہ سکتا تھا لیکن وہ محفوظ رہے، اور اس بات پر خدا کا شکر ادا کرنے کے لئے وہ اپنے خون سے قرآن مجید لکھوانا چاہتے تھے۔

اس نسخے کی تیاری میں کل تین سال کا عرصہ لگا۔ اگرچہ کہ واضح نہیں کیا گیا کہ اس کی تحریر میں عراقی صدر کا کتنا خون استعمال ہوا، لیکن یقینا یہ اچھی خاصی مقدار رہی ہو گی کیونکہ تقریباً 336000 الفاظ کو تحریر کرنے کے لئے کافی مقدار میں خون کی ضرورت پیش آئی ہو گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس