کراچی میں صفائی کے لیے مؤثر نظام بنانے کی ضرورت ہے: حافظ نعیم الرحمن 

      کراچی میں صفائی کے لیے مؤثر نظام بنانے کی ضرورت ہے: حافظ نعیم الرحمن 

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ کراچی میں کچرے کی صفائی کے لیے کسی مہم کی ضرورت نہیں بلکہ باقاعدہ ایک مؤثر اورمربوط نظام بنانے کی ضرورت ہے،وفاقی و بلدیاتی حکومت نے بھی کچرے کی صفائی کے حوالے سے مہم چلائی اور کراچی کے عوام سے لاکھوں روپے فنڈز اکھٹا کیے لیکن کراچی میں کچرا جوں کا توں موجود رہا اور اب صوبائی حکومت مہم چلارہی ہے اور کہاجارہا ہے کہ کچرا نہ پھینکا جائے لیکن یہ نہیں بتایاجاتا کہ کچرا کہاں پھینکا جائے،کچرا اٹھانے کا کام روز کرنے کا کام ہے اور ایسا نہ کرنے کی وجہ سے ہی شہر بھر میں جگہ جگہ کچرا جمع ہے۔جماعت اسلامی نے ہمیشہ عوامی خدمات اورمسائل کے حل کی جدوجہد کی ہے اورصرف خدمت خلق کے جذبے اوررضائے الہیٰ کے لیے کی ہے اور آئندہ بھی اسی مشن کو آگے بڑھائیں گے اور کراچی کو گرین اور کلین کراچی بنائیں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی علاقہ گلبرگ کے تحت مہم چرم قربانی کے سلسلے میں رضاکاروں اور کارکنوں کے ”استقبالیے“ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر امیر ضلع گلبرگ وسطی فاروق نعمت اللہ، ناظم علاقہ گلبرگ عرفان شاہ ودیگرنے بھی خطاب کیا۔استقبالیے میں چرم قربانی مہم میں حصہ لینے والے کارکنان میں اسناد اور تحائف بھی تقسیم کیے گئے۔حافظ نعیم الرحمن نے استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہاکہ شہری جانتے ہیں کہ واحد جماعت اسلامی اور الخدمت ادارہ ایسا ہے جس کے پاس ہر ایک چیز کا آڈٹ موجو د ہے اسی لیے شہری جماعت اسلامی پر ہی اعتماد کرتے ہیں اور عوام کے تعاون سے ہی کراچی میں ا لخدمت کے تحت چلائے جانے والے پروجیکٹس، صحت، تعلیم، روزگار، صاف پانی سمیت زندگی کے مختلف شعبہ جات کی سرگرمیاں جاری ہیں۔ الخدمت ملک بھر میں مختلف شعبوں میں گراں قدر خدمات انجام دے رہی ہے اور لوگوں کے غم سمیٹنے اور ان میں خوشیاں باٹنے کے عمل میں مصروف ہیں۔ الخدمت گزشتہ کئی دہائیوں سے ملک و قوم کی خدمت کررہی ہے، ملک میں آنے والی قدرتی آفات ہوں یا سیلاب کبھی بھی عوام کی خدمت میں پیچھے نہیں رہی اورہمیشہ سب سے پہلے اور آگے بڑھ کر متاثرین کی بحالی اور امداد میں شریک ہوئی ہے۔حافظ نعیم الرحمن نے آزاد کشمیر میں زلزلہ سے متاثرہونے والوں کے ورثاء سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ جماعت اسلامی مشکل کی اس گھڑی میں متاثرین کے ساتھ ہے اور ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ متاثرین کی امداد وبحالی اور فوری ریلیف کے لیے ہر ممکن اقدامات کرے۔انہوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی جارحیت کو 53دن ہوچکے ہیں تاحال کشمیریوں کا کوئی پرسان حال نہیں ہے، تعلیمی ادارے بند،اخبارات کی اشاعت بھی رْکی ہوئی ہے اس کے علاوہ کھانے پینے کی اشیاء کی قلت ہے اور مریضوں کو ادویات کی فراہمی مشکل ہوگئی ہے جس کے باعث کشمیریوں کی زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی ہے،کشمیریوں پر تشدد کے واقعات اور گرفتاریوں میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔حکمرانوں نے کشمیر کے بارے میں عوام سے جھوٹے وعدوں اور دعوؤں کے سوا کچھ نہیں کیا۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -