چلڈرن کمپلیکس‘ سرجری کے بغیر 8بچوں کے دل کے سوراخ بند‘ والدین خوش

چلڈرن کمپلیکس‘ سرجری کے بغیر 8بچوں کے دل کے سوراخ بند‘ والدین خوش

  

ملتان (خبر نگار خصوصی) پاکستان چلڈرن ہارٹ فاونڈیشن اور ٹی ذی پی کے تعاون سے قطر سے آئے ہوئے ماہر چائلڈ کارڈیالوجسٹ کی زیر نگرانی چلڈرن کمپلیکس میں پہلی باراوپن ہارٹ سرجری کئے بغیر جدید طریقہ علاج (ڈیوائس کلوزر)کے ذریعے دل کے سوراخ بند کرنے کا کامیاب تجربہ۔(بقیہ نمبر9صفحہ12پر)

ڈین پروفیسر مختار بھٹی ایم ایس ڈاکٹر مظہرالخالق۔کارڈک سرجری کے دیگر ماہرین کی طرف سے مبارک باد دی گئی۔تفصیل کے مطابق بچوں کے پنجاب میں دوسرے بڑے چلڈرن ہسپتال میں دل کے سوراخ سے متاثرہ بچوں کی اوپن ہارٹ سرجری کی بجائے جدید ٹیکنالوجی اے ایس ڈی کیلئے ڈیوائس کلوزر کا کامیاب تجربہ کیا گیا۔جدید ٹیکنالوجی کی ٹریننگ کیلئے قطر سے آئے ہوئے چائلڈ کاڈیالوجسٹ پروفیسر ڈاکٹر یونس بوڈ جملین۔پروفیسر سیف الرحمن نے اپنی زیر نگرانی چلڈرن ہسپتال شعبہ کارڈیالوجی کیڈاکٹرز کو ٹریننگ کرائی اور اپنی زیر نگرانی پہلے روز 8 بچوں بارہ سالہ نور فاطمہ۔سات سالہ ایمان۔6 سالہ سارہ۔نو سالہ ریحانہ۔تیرہ سالہ صبا۔تین سالہ حمید۔ اور آٹھ سالہ مسکان کی اوپن ہارٹ سرجری کے بغیر کامیابی سے ڈیوائس کلوزرdevice cluser طریقی علاج سے بچوں کے دل کے سوراخ بند کئے گئے۔اس حوالے سے پاکستان چائلڈ ہارٹ فاونڈیشن اور ٹی زی پی کے زیر اہتمام کارڈیالوجسٹ کی ٹریننگ کیلئے ورکشاپ کا اہتمام بھی کیا گیا جس میں چلڈرن ہسپتال شعبہ کارڈیالوجی کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر سہیل ارشد۔ ڈین پروفیسر مختار بھٹی۔میڈم فادیہ۔فرحان احمد۔پروفیسر یونس بوڈ جملین۔پروفیسر سیف الرحمن ودیگر مقررین نے بھی خطاب کیا۔مقررین نیخطاب کے دوران شرکا کو بتایا کہ دل کے سوراخ والے مریض بچوں کو اوپن ہارٹ سرجری نہیں کی جائے گی ایسے بچےatrial spetal defect ہوتے ہین ان کا علاج ڈیوائس کلوزر کے ذریعے انجیو گرافی کے ذریعے پلاسٹی کرکے دل کے سوراخ بند کئے جایئں گے۔یہ جدید ٹیکنالوجی علاج پر ایک مریض بچہ کیلئے تین سے چار لاکھ روپے خرچ آتا ہے جو کہ پاکستان چائلڈ ہارٹ فاونڈیشن اور ٹی زی پی کے تعاون سے کیا جا رہا ہے۔آٹھ بچوں کے کامیاب تجربہ پر شعبہ کارڈیالوجی کے ماہرین کو ہسپتال انتظامیہ کی طرف سے مبارک باد دی گئی۔

دل کے سوراخ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -