مقبوضہ کشمیر پر بھارتی غاصبانی قبضے کیخلاف پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج یوم سیاہ منایا جائیگا

    مقبوضہ کشمیر پر بھارتی غاصبانی قبضے کیخلاف پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ...

  

اسلام آباد/نیویارک (این این آئی)مقبوضہ کشمیر پر بھارتی غاصبانہ قبضے کے خلاف آج اندرون وبیرون ملک یوم سیاہ منایا جائیگا۔تفصیلات کے مطابق بھارت کیخلاف یوم سیاہ منانے کے حوالے سے وزارت امور کشمیر و گلگت بلتستان میںایک اعلیٰ سطحی اجلاس منعقد ہوا۔۔جس میں وزارت داخلہ ، وزارت خارجہ ،وزارت اطلاعات، پی آئی ڈی ،ڈیمپ،پارلیمنٹ کی کشمیر کمیٹی ، ،ریڈیو پاکستان،پاکستان ٹیلی ویژن ،پیمرا ،آرٹ کو نسل،لوک ورثہ ،اسلام آباد انتظامیہ، چاروں صوبوں کے ساتھ ساتھ آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کے اعلیٰ افسرام نے بھی شرکت کی۔تمام صوبائی حکومتوں اور اداروں کے نمائندہ افسران نے بلیک ڈے کے حوالے سے اپنی ذمہ داریوں اور تجاویز سے اجلاس کے شرکاءکو آگا ہ کیا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ تمام تر تجاویز کا باغور جائزہ لینے کے بعد اگلے اجلاس میں حتمی منظوری دی جائے گی۔ اجلاس کے شرکاءنے اس عزم کا اظہار کیا کہ اندرون وبیرون ملک مقبوضہ کشمیر پر بھارت کے غاصبانہ قبضے کے خلاف یوم سیاہ بھرپور انداز میں منانے کےلئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں گے اور اس سلسلے میں کوئی کسراٹھانہ رکھی جائے گی ۔نیویارک میںاوورسیز پاکستانیز گلوبل فاﺅنڈیشن کے زیراہتمام پاکستانی کمیونٹی کشمیری عوام پر بھارتی مظالم کرفیو کے ذریعے کشمیریوں کے محاصرے اور مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت تبدیل کرنے کے خلاف ریلی نکالے گی ۔ ریلی میں نیو یارک میںمقیم پاکستانیوں کے علاوہ سکھ کمیونٹی اور دیگر مقامی امریکی شہری بھی بڑی تعداد میں شرکت کریں گے۔ دوسری جانب وزیر داخلہ اعجاز احمد شاہ نے قوم سے اپیل کی کہ وہ آج اپنے جذبات کا بھر پور اظہار کریں اور مقبوضہ جموں و کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کے خلاف بھر پور آواز اٹھائیں۔ انہوں نے کہا کہ وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن میں موجود ہیش ٹیگ کا استعمال کر یں اور ہر پلیٹ فارم پر مقبوضہ کشمیر کے مظلوم شہریوں کی آواز بنیں۔

یوم سیاہ

 سرینگر(این این آئی)مقبوضہ کشمیر میں بھارت کا فوجی محاصرہ بدستور جاری ہے جس کی وجہ سے وادی کشمیر میں معمولات زندگی بری طرح سے مفلوج ہیں۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق وادی میں خوراک اور ادویات کی شدید قلت پیدا ہوگئی۔سرینگر سمیت دیگر شہروں اور قصبوں میں بازار ، کاروباری مراکز بند جبکہ سڑکوںپر ٹریفک معطل ہے، مواصلاتی رابطے بھی منقطع ہیں ۔تعلیمی اداروں میں حاضری نہ ہونے کے برابر ہے۔سرےنگر شہر کے اندرونی علاقے کا زےادہ حصہ ناکوں اور خاردار تاروںکی ذرےعے مسلسل بندہے۔ مریض بہت زیادہ مشکل صورتحال سے دوچار ہیں کیونکہ وادی میں زندگی بچانے والی ادویات کی بھی سخت قلت پیدا ہو گئی ہے۔

مقبوضہ کشمیر

مزید :

صفحہ اول -