حکمران کشمیر کا سودا کرچکے ,صرف عوام کو بیوقوف بنارہے ہیں :مولا بخش چانڈیو

حکمران کشمیر کا سودا کرچکے ,صرف عوام کو بیوقوف بنارہے ہیں :مولا بخش چانڈیو
حکمران کشمیر کا سودا کرچکے ,صرف عوام کو بیوقوف بنارہے ہیں :مولا بخش چانڈیو

  

حیدرآباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما سینیٹر مولابخش چانڈیو نے کہا ہے کہ  ہم حکومت کو ہلاکر رکھ دیں گے لیکن جمہوریت کا جھٹکا برداشت نہیں کرسکتے،اقتدار چلانا ہے تو طریقے سے چلائیں،حکمران کشمیر کا سودا کرچکے ہیں،صرف عوام کو بیوقوف بنارہے ہیں۔

حیدر آباد پریس کلب میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مولا بخش چانڈیو نے کہاکہ پاکستان پیپلزپارٹی اور اپوزیشن میں اتنا دم ہے کہ حکومت کو ہلاکر رکھ سکتے ہیں لیکن ہم جمہوریت کو جھٹکا دینے کے حامی نہیں ہیں کیونکہ جمہوریت کیلئے ہمیں ہی قربانیاں دینا ہوتی ہے،کوئی پارٹی جمہوریت کیلئے قربانی نہیں دیتی ، جمہوریت کیلئے جیلیں کاٹنا  اور جانیں دینا پڑتی ہیں اور کوڑے کھانے پڑتے ہیں،جمہوریت کیلئے نوجوانوں کو جیلوں میں اپنی جوانیاں گزارنی پڑتی ہیں جو ہمارے نوجوان گزار چکے ہیں۔ مولابخش چانڈیو نے کہاکہ اگر وزیراعظم یہ کہیں کہ القاعدہ اور طالبان ہمارے ہیں تو پھر ہندوستان کے سارے الزامات درست ثابت ہوجائیں گے، ان امکانات سے کیسے جان چھڑاؤ گے؟آپ کے ذہن میں کوئی کشمیر نہیں آپ کے پاس کشمیر کی کوئی بات ہے ہی نہیں،کشمیر کا آپ سودا کرچکے ہیں،صرف پاکستان کے عوام کو بیوقوف بنانا چاہتے ہیں،یہ بات پاکستان کا بچہ بچہ سمجھتا ہے کہ پورا سال ہم طالبان اور القاعدہ سے جان چھڑانے میں لگے ہوئے تھے، ان کی وجہ سے ہمیں کتنی مشکلات دیکھنی پڑیں،القاعدہ اور طالبان کی وجہ سے پاکستان کے ہزاروں لوگوں نے جانیں قربان کی ہیں، آپ مرغیاں پالو ، ہماری جان چھوڑو ، لوگوں کی مشکلات ختم کراؤ ، ملک میں مہنگائی کی وجہ سے لوگوں کا جینا مشکل ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ امریکہ کا صدر جس انداز سے آپ سے بات کرتا ہے اور جس انداز سے مودی سے بات کرتا ہے ہمیں شرم آتی ہے ، مودی اس انداز سے نہیں جھکتا جس انداز سے آپ مرے جارہے ہیں،امریکہ کا صدر اعلانیہ ہندوستان کی حمایت کرتا ہے،جو کچھ کشمیر میں ہورہا ہے وہ آپ کی شرمندگی کیلئے کافی ہے،آپ اپنے دوستوں سے ایک قرارداد پاس نہیں کراسکے، آپ کیا  ثالثی کریں گےایران اور سعودی عرب کیلئے، آپ کی دانش مندی کو وہ دیکھ چکے ہیں وہ کہتے ہیں کہ ہمیں آپ کی ثالثی نہیں چاہئے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -حیدرآباد -