ظہور دھریجہ کی وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی  ڈاکٹر انجینئر اطہر محبوب سے ملاقات‘ خواجہ  فرید کانفرنس کے حولے سے تبادلہ خیال

 ظہور دھریجہ کی وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی  ڈاکٹر انجینئر اطہر محبوب سے ...

  

 ملتان (سٹی رپورٹر)اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کو دنیا کی بہترین یونیورسٹی بنا ئیں گے۔ 6 اکتوبر کو ہونیوالی خواجہ(بقیہ نمبر34صفحہ 6پر)

 فرید کانفرنس کے دور رس اثرات مرتب ہونگے۔ ان خیالات کا اظہار وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر انجینئر اطہر محبوب نے ظہور دھریجہ سے ملاقات کے دوران کیا۔ انہو ں نے کہا کہ کسی بھی یونیورسٹی کے قیام کا پہلا مقصد خطے کی تہذیب، ثقافت اور آثار پر تحقیق ہوتا ہے۔ یونیورسٹی میں قائم خواجہ فرید چیئر جو سالہا سال سے فنکشنل نہیں تھی کو فنکشنل کر رہے ہیں اور 6اکتوبر 2020ء کو خواجہ فرید کانفرنس کرا رہے ہیں۔ یہ کانفرنس اس سال کے آخر میں یونیورسٹی میں ہونیوالی انٹر نیشنل خواجہ فرید کانفرنس کا پیش خیمہ ہے۔ ڈاکٹر اطہر محبوب نے کہا کہ سرائیکی خطے پر خواجہ فرید کی شاعری کے بہت اثرات ہیں، بلاشبہ شاعری میں فطرت نگاری کے حوالے سے ان کی حیثیت شیکسپیئر اور گوئٹے سے کسی طرح کم نہیں ہے۔ خواجہ فرید کی شاعری عالمی ادب کا حصہ ہے اور اسلامیہ یونیورسٹی وسیب کے ہیروز کے کارناموں کو اجاگر کرنے میں بھرپور کردار ادا کرے گی۔ ظہور دھریجہ نے شکریہ ادا کرتے ہوئے وائس چانسلر سے اپیل کی کہ اسلامیہ یونیورسٹی کو پاکستان کی بہترین یونیورسٹی بنانے کے لئے آپ کی کوششیں لائق تحسین ہیں، یونیورسٹی کا سرائیکی شعبہ اس لئے اہم ہے کہ یہ خطے کی زبان کا شعبہ ہے، استدعا ہے کہ BZU کی طرح اس کی الگ عالیشان عمارت بنوائیں، خواجہ فرید چیئر فنکشنل کریں، یونیورسٹی کے رحیم یار خان اور بہاولنگر کیمپس میں سرائیکی ڈیپارٹمنٹ کھلوائیں، یونیورسٹی فرید محل چاچڑاں پر بھی ریسرچ کرائے اور ممکن ہو تو اسے میوزیم میں تبدیل کیا جائے۔ سرائیکی ڈیپارٹمنٹ کا ریسرچ جرنل یونیورسٹی کے ساتھ دیگر اسکالرز کے لئے بھی کار آمد ثابت ہوگا۔ وائس چانسلر نے مطالبات کے جواب میں کہا کہ ہم آہستہ آہستہ اس طرف بڑھ رہے ہیں، تمام مطالبات پورے کئے جائیں گے۔

ملاقات

مزید :

ملتان صفحہ آخر -