ڈیرہ ریجن: اتائی ڈرائیورز“ کیخلاف آپریشن شروع کرنیکا فیصلہ‘ افسروں کو نیا ٹاسک 

  ڈیرہ ریجن: اتائی ڈرائیورز“ کیخلاف آپریشن شروع کرنیکا فیصلہ‘ افسروں کو ...

  

ڈیرہ غازی خان (ڈسٹرکٹ بیورورپورٹ) آر پی او فیصل رانا کی زیر صدارت ریجن کے چاروں اضلاع میں ٹریفک مسائل کے حل کے لیے اہم اجلاس ہوا، ان ٹرینڈ اور کم عمر گاڑیاں چلانے والے ”اتائی  ڈرائیورز“ہیں جن کے خلاف قانونی آپریشن شروع کرنے کا (بقیہ نمبر48صفحہ 6پر)

فیصلہ کیا گیا ہے، تفصیلات کے مطابق ریجنل پولیس آفیسر ڈی آئی جی محمد فیصل رانا کی زیر صدارت ریجن کے چاروں اضلاع میں ٹریفک کے مسائل کے حوالے سے اہم ویڈیو لنک اجلاس منعقد ہوا جس میں ڈی پی او مظفر گڑھ حسن اقبال،ڈی پی او لیہ سید ندیم عباس،ڈی پی او راجن پور احسن سیف اللہ،ایس پی انوسٹی گیشن ڈی جی خان فراز احمد، ڈسٹرکٹ ٹریفک آفیسر ڈی جی خان اسحاق سیال،ڈی ٹی اومظفر گڑھ شمشاد احمد،ڈی ٹی اولیہ ریاض حسین بخاری اور ڈی ٹی او راجن پور ریاض احمد بھابھہ نے شرکت کی،اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے آر پی او محمد فیصل رانا نے کہا کہ ٹریفک کی روانی  معاشرتی روانی کا عکاس ہوتی ہے،لیکن جس طرح اتائی ڈاکٹرز انسانی جانوں کے لئے خطرہ ہیں اسی طرح ”اتائی ڈرائیورز“ بھی حادثات میں چلی جانے والی جانوں کے ذمہ دار ہوتے ہیں،ضروری اور ناگزیر ہو گیا ہے ایسے ان ٹرینڈ ”اتائی ڈارئیورز“ کے ڈرائیونگ لائسنس منسوخ کروائے جائیں جو اپنی غفلت،لاپرواہی اور اتائی پن کی وجہ سے ٹریفک حادثات کا باعث بنتے ہیں،اسی طرح ایسے کم عمر بچوں کو بھی ہر قسم کی گاڑیاں چلانے سے قانون کے مطابق روکا جائے جن کی عمریں قانون کے مطابق ڈرائیونگ کرنے سے مطابقت نہیں رکھتیں،انہوں نے کہا کہ ایک طرف ہم نے حادثات کا باعث بننے والے ”اتائی ڈرائیورز“ کے لائسنس منسوخ کروانے ہیں تو دوسری طرف ہم نے لائسنس بنانے کے عمل کو انتہائی شفاف اور قانون و میرٹ کے عین مطابق بنانا ہے جب ان ٹرینڈ،کم عمر اور اتائی ڈرائیورز کو لائسنس جاری ہی نہیں ہوں گے تو پھر ان کا بطور ڈرائیور گاڑیوں کو سڑکوں پر لانا خاصا مشکل ہو جائے گا،ٹریفک سٹاف تیز رفتاری کو روکے،غیر لائسنس یافتہ اور میرٹ سے ہٹ کر لائسنس حاصل کرنے والوں کا قانون کے مطابق قلع قمع کرے لیکن ٹریفک اہلکاروں کو محکمہ کے سافٹ امیج کو بھی سامنے لانا ہے،اخلاق کی زبان میں کی جانے والی گفتگو سے عوام دوست پولیسنگ مستحکم ہوتی ہے،اس سلسلہ میں ٹریفک اہلکاروں کے لئے بھی ”پہلے سلام اور پھر کلام“ کی پالیسی نافذ کر دی گئی ہے،جس شخص نے ٹریفک قوانین کو توڑ ا ہو ان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ضرور ہو لیکن سارا قانونی عمل اخلاق کے دائرے میں ہونا چاہیے،آر پی او نے کہا کہ اضلاع کے ڈی پی اوز ٹریفک قوانین کے حوالے سے سڑکوں پر آگاہی مہم چلوائیں،ہیلمٹ کے استعمال کو یقینی بنایا جائے،فیصل رانا نے کہا کہ ڈی ٹی اوز اپنے اضلاع کے تمام بڑے شہروں کی سڑکوں اور چوکوں پر اس بات کو یقینی بنائیں کہ ٹریفک ایک لمحہ کے لئے بھی بلاک نہ ہو،اگر ٹریفک قوانین پر پولیس عمل کروائے تو ٹریفک بند ہونے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا،انہوں نے کہا کہ ڈی ٹی اوز اپنے اضلاع میں ٹریفک اہلکاروں کی طرف سے کئے جانے والے چالان کے عمل کی نگرانی کریں،اگر کسی شہری کی طرف سے ٹریفک اہلکار یا آفیسر کے خلاف کرپشن کی شکائت آتی ہے تو اس پر فوری انکوائری ہو گی ذمہ دار اہلکاروں کے خلاف محکمانہ قواعد وضوابط کے تحت کارروائی ہو گی،آر پی او نے کہا کہ میرے دفتر سے بھی ریجن کے چاروں اضلاع میں ٹریفک پولیس کی مانیٹرنگ کے حوالے سے ایک مربوط سسٹم قائم کیا جا رہا ہے تاکہ وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے ویژن اور آئی جی پنجاب انعام غنی کی ہدایات کے مطابق عوامی شکایات کا خاتمہ ہو سکے۔

ٹاسک

مزید :

ملتان صفحہ آخر -