مقدس شخصیات کی توہین کسی صورت برداشت نہیں کی جائیگی‘ حنیف جالندھری 

  مقدس شخصیات کی توہین کسی صورت برداشت نہیں کی جائیگی‘ حنیف جالندھری 

  

 ملتان (سٹی رپورٹر) ممتاز عالم دین مفتی محمد تقی عثمانی، جمعیت علمائے اسلام کے امیر مولانا فضل الرحمن، تنظیم المدارس پاکستان کے صدر مفتی منیب الرحمن، سینیٹر ساجد میر، (بقیہ نمبر24صفحہ 6پر)

سابق وفاقی وزیر حامد سعید کاظمی، اہلسنت و الجماعت کے سربراہ مولانا محمد احمد لدھیانوی، پاکستان علماء کونسل کے چیئرمین مولانا طاہر اشرفی، پاکستان شریعت کونسل کے جنرل سیکرٹری مولانا زاہد الراشدی، وفاق المدارس السلفیہ کے ناظم اعلیٰ مولانا ڈاکٹر یاسین ظفر، جامعہ اشرفیہ لاہور کے مہتمم مولانا حافظ فضل الرحیم,جمعیت علماء پاکستان کے رہنما علامہ شاہ اویس نورانی, مفتی ابراہیم قادری اور دیگر اہم سیاسی، سماجی اور مذہبی شخصیات نے مولانا محمد حنیف جالندھری کو ملتان میں کامیاب عظمت صحابہ و اہلیبیت مارچ کے انعقاد پر مبارکباد دی اور کہا کہ تمام مسالک کو متحد کر کے مشترکہ اجتماع وقت کی ضرورت اور موجودہ حالات کا تقاضا تھا، اس تاریخ ساز اجتماع کے گہرے اور دور رس نتائج اور اثرات مرتب ہوں گے، اس موقع پر مولانا محمد حنیف جالندھری نے بھی تمام اکابرین، علمائے کرام اور مبارک باد دینے والے تمام رہنماؤں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ عظمت صحابہ و اہلیبیت مارچ میں ہماری توقع سے بھی کئی گنا زیادہ لوگ شریک ہوئے، اتنے بڑے اجتماع کے انعقاد سے ثابت ہو گیا کہ پاکستان کے عوام کسی طور پر بھی ناموس رسالت، عظمت صحابہ و اہلیبیت کے حوالے سے کوئی سمجھوتہ نہیں کر سکتے، مقدس شخصیات کی توہین کسی صورت قابل برداشت نہیں، حکومت اور مقتدر حلقوں کو چاہیے کہ عوام کے اس مطالبے کو تسلیم کرتے ہوئے مقدس شخصیات کی عظمت و ناموس کے قانون میں موجود سقم دور کر کے سخت قانون سازی کی جائے اور گستاخی کے مرتکب افراد کو عبرتناک سزائیں دی جائیں۔

حنیف جالندھری

مزید :

ملتان صفحہ آخر -