زکریا یونیورسٹی بورڈ اجلاس میں ہنگامہ، دو امید واروں کی ڈگریاں چیلنج، آج اہم فیصلے

زکریا یونیورسٹی بورڈ اجلاس میں ہنگامہ، دو امید واروں کی ڈگریاں چیلنج، آج اہم ...

  

 ملتان (سپیشل رپورٹر) زکریا یونیورسٹی کا سلیکشن بورڈ اجلاس ہوا، پروفیسراور ایسوسی ایٹ پروفیسر تعینات کئے گئے، ایسوسی ایٹ پروفیسر الیکٹریکل  کے امیدواروں کی ڈگریاں  چیلنج کردی  گئیں، بورڈ نے عدالتی معاملے والے کیسز کو سننے سے معذرت کرلی، تفصیل کے مطابق زکریا یونیورسٹی کا سلیکشن بورڈ اجلاس گزشتہ روز وائس چانسلر پروفیسر  ڈاکٹر منصور اکبر کنڈی کی صدارت میں منعقد ہوا، جس میں متعدد(بقیہ نمبر8صفحہ 6پر)

 پروفیسروں اور ایسوسی ایٹ، اور اسسٹنٹ پروفیسر وں کی تعیناتی کی سفارش کی گئی، ذرائع کے مطابق پروفیسر آف بزنس ایڈمنسٹریشن کیلئے ڈاکٹر حسن بچہ، پروفیسر آف سائیکالوجی کے لئے ڈاکٹر ثروت سلطان، ایسوسی ایٹ پروفیسر آف سائیکالوجی کی ڈاکٹر ارم اعوان، ایسوسی ایٹ پروفیسر آف پاکستان سٹڈی سوشیالوجی کے ڈاکٹر امیتاز وڑائچ، پروفیسر آف میٹ الرجی کیلئے ڈاکٹر وحید قمر، ایسوسی ایٹ پروفیسر آٖف سول انجینئرنگ ڈاکٹر تنویر، پروفیسر آف سیاسیات کے لئے ڈاکٹر مقرب اکبر، اور ڈاکٹر شاہد بخاری، ایسوسی ایٹ انگلش کے لئے ڈاکٹر قمر خوشی، پروفیسر آف ویٹرنری سائنسز کے لئے ڈاکٹر عرفان، ایسوسی ایٹ پروفیسر کے لئے ڈاکٹر اویس، ایسوسی ایٹ پروفیسر آف پتھالوجی کے لئے ڈاکٹر رضا،لیکچرر آف الیکٹریکل انجینئرنگ کیلئے فراز امام، کے ناموں کی سفارش کی گئی  ممبر سینڈیکٹ عطیہ اعوان کی بہن ثروت جبین جن کو سابق وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر طارق انصاری راتوں رات ویمن یونیورسٹی ملتان سے ڈیپوٹیشن پر زکریا یونیورسٹی لائے تھے کو اب مستقل طور پر شعبہ انگلش میں اسسٹنٹ پروفیسر تعینات کرنے کی منظوری دے دی گئی ہے،ایسوسی ایٹ پروفیسر کیلئے ڈاکٹر ریحانہ کے نام کی سفارش کی گئی، جبکہ بورڈ نے پروفیسر آف بائیوٹیکنالوجی اور ایسوسی ایٹ  پروفیسر آف اکنامکس کا کیس سننے سے معذرت  کرلی اور کہا کہ دونوں امیدواروں کے خلاف کیس عدالت میں ہیں اور ان پر سٹے آرڈر ہے اس لئے اس کیس کو نہیں سنا جاسکتا، ایسوسی ایٹ پروفیسر آف ٹیکسٹائل انجینئرنگ کیلئے  ڈاکٹر عامر شیرازی، اورایسوسی ایٹ پروفیسر آف ماس کیمونیکشن کیلئے ڈاکٹر حسن شیراز ی کے نام کی سفارشی کی گئی  پروفیسر آف کامرس  ڈاکٹر آصف یاسین اور اسسٹنٹ  پروفیسر کے لئے ذیشان محبوب  کے نام کی سفارش کی گئی  اجلاس میں اہم ایجنڈا ایسوسی ایٹ پروفیسر آف الیکٹریکل انجینئرنگ کا تھا جس پر شدید ہنگامہ رہا،  ایسوسی ایٹ پروفیسر آف الیکٹریکل انجینئرنگ کی دو سیٹوں کے لئے تین امیدوار میدان میں تھے جن میں صدر اکیڈمک سٹاف ایسوسی ایشن ڈاکٹر عبدالستار ملک، ڈاکٹر عمران ملک اور ڈاکٹر محمد ابرار تھے۔ سلیکشن بورڈ میں طویل بحث کے بعد ڈاکٹر عبدالستار ملک کی پی ایچ ڈی کی ڈگری کو الیکٹرکل انجینرنگ کی فیلڈ سے مطابقت نہ ہونے پر غیر موزوں قرار دیتے ہوئے انہیں نااہل قرار دے دیا اور ڈاکٹر عمران ملک اور ڈاکٹر محمد ابرار کو منتخب کر لیا گیا۔جس کی اطلاع ملنے پر ڈاکٹر عبدالستار ملک نے سلیکشن بورڈ سے درخواست کی کہ انہیں شنوائی کا موقع دیا جائے جسے منظور کرتے ہوئے ڈاکٹر عبدالستار ملک کو مؤقف پیش کرنے کا موقع دیا گیا۔ بورڈ میں ڈاکٹر عبدالستار ملک کا کہنا تھا کہ ان سے  زیادتی کی جارہی ہے اور انہوں نے اپنے کیس کے حق میں دلائل پیش کئے تاہم وہ بورڈ کو مطمئن کرنے میں ناکام رہے اور غور و خوص کے بعد سلیکشن بورڈ نے فیصلہ برقرار رکھتے ہوئے ڈاکٹر عبدالستار ملک کی نااہلی کا فیصلہ سنا دیا۔ جس کے بعد ڈاکٹر عبدالستار ملک کا کہنا تھا کہ باقی دو امیدواروں کی ڈگریوں اور ان کی ڈگری میں کوئی فرق نہیں لہٰذا ان کے ساتھ امتیازی سلوک نہیں ہونا چاہیے۔ سلیکشن بورڈ نے ڈاکٹر عبدالستار ملک کی درخواست منظور کرتے ہوئے باقی دو امیدواروں کی ڈگریاں بھی چیک کرنے کا حکم دیا اور اس سلسلے میں 2 رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی جس کے ممبران ڈین فیکلٹی آف کامرس، لاء اینڈ بزنس ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر شوکت ملک اور رجسٹرار صہیب راشد خان ہوں گے۔ کمیٹی کوائف کی چھان بین کے بعد ڈاکٹر عمران ملک اور ڈاکٹر محمد ابرار کی پی ایچ ڈی کی ڈگریوں کی مطابقت کی رپورٹ سلیکشن بورڈ کے آج کے اجلاس میں پیش کرے گی۔

ہنگامہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -