ملک میں چلنے والے معاملات ناقابل یقین ہیں: سید مصطفی کمال 

ملک میں چلنے والے معاملات ناقابل یقین ہیں: سید مصطفی کمال 

  

 کراچی (اسٹاف رپورٹر)پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ سیدمصطفی کمال نے کہا ہے کہ پاکستان میں چلنے والے معاملات ناقابل یقین ہیں، کراچی کے معاملات سے توجہ ہٹ گئی۔ جب دوبارہ بارش ہوگی لوگ مریں گے پھر دوبارہ ڈرامہ شروع ہوگا۔احتساب عدالت کراچی میں پیشی کے بعدمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پورا پاکستان پیشیاں بگھت رہا ہے۔ پاکستان میں جو معالات چل رہے ہیں وہ ناقابل یقین ہیں، کسی کو روٹی کھانا پانی مل رہا ہے یا نہیں کیسی کو کوئی پرواہ نہیں۔ ابھی سب کو اپنی کرسی بچانے کی پڑی ہے۔انہوں نے کہا کہ کچھ روز پہلے کراچی کے معاملات اہم ایشوز تھے۔ لاہور اور اے پی سی کے بعد کراچی کے معاملات سے توجہ ہٹ گئی۔ جب دوبارہ بارش ہوگی لوگ مریں گے پھر دوبارہ ڈرامہ شروع ہوگا۔ پیپلز پارٹی وفاقی حکومت پر تو تنقید کر رہی ہے لیکن ان کے کارنامے سب کے سامنے ہیں۔ کراچی سے کشمور تک تباہی و بربادی ہے۔انہوں نے کہاکہ اب ایم کیو ایم کو بھی موقع مل گیا۔ ایم کیو ایم والے کہہ رہے ہیں کہ نیا صوبہ بنے گا تبھی کام کریں گے۔ کیسے نیا صوبہ بنائیں گے کیونکہ صوبہ تو ایک آئینی مسئلہ ہے۔ ایک کہہ رہا ہے صوبہ بنا دوسرا کہہ رہا ہے دھرتی ماں کو توڑنے نہیں دیں گے۔مصطفی کمال نے کہا کہ صوبائی مالیاتی کمیشن کو فعال کیا جائے۔ 11 سوارب کی کہانی کاغذوں پر آئی ختم ہوگئی۔ ہمیں کراچی کیلئے اختیارات اور حقوق چاہیے۔ ہمارے پیسوں سے ملک چل رہا ہے لیکن ہمیں ہی کچھ نہیں دیا جا رہا ہے صرف کاغذی پیکج دیئے جا رہے ہیں، اگر ایسی طرح سے معاملات چلیں گے تو معاملات ہاتھوں سے نکل جائے گا۔پی ایس پی سربراہ  نے کہاکہ اگر معاملات ایسے چکے تو بین الاقوامی طاقتیں یہاں دخل اندازی کریں گے۔ حیدرآباد میں 20 دنوں سے بجلی نہیں۔ جس دن سے بارش ہوئی ہے میرے گھر میں ہی گیس نہیں ہے۔

مزید :

صفحہ اول -