افغانستان میں امن و استحکام طاقت کے ذریعے باہر سے تھوپا نہیں جا سکتا ،وزیراعظم عمران خان 

افغانستان میں امن و استحکام طاقت کے ذریعے باہر سے تھوپا نہیں جا سکتا ...
افغانستان میں امن و استحکام طاقت کے ذریعے باہر سے تھوپا نہیں جا سکتا ،وزیراعظم عمران خان 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ افغانستان میں امن ممکن ہے ،افغانستان کی قیادت، افغانوں کی شمولیت سے ہی پائیدار امن ممکن ہے ،افغانستان میں امن و استحکام طاقت کے ذریعے باہر سے تھوپا نہیں جا سکتا ،افغانستان میں امن نہ ہونے تک پاکستان بھی حقیقی امن حاصل نہیں کر سکتا۔

وزیراعظم عمران خان نے امریکی روزنامہ واشنگٹن پوسٹ میں اپنے مضمون میں کہاہے کہ افغانستان میں امن ممکن ہے ،افغانستان سے غیر ملکی افواج کا عجلت میں انخلا غیردانش مندانہ ہوگا،اس وقت افغانستان اور خطے کیلئے امیدکاسنہری موقع ہے ۔

وزیراعظم کا کہناہے کہ دوحہ مذاکرات کے نتیجے میں افغان جنگ خاتمے کے قریب ہے ، پاکستان افغانستان آپس میں جغرافیہ ثقافت اور رشتوں سے جڑے ہیں ،افغانستان کی قیادت افغانوں کی شمولیت سے ہی پائیدار امن ممکن ہے ،افغانستان میں امن و استحکام طاقت کے ذریعے باہر سے تھوپا نہیں جا سکتا ،افغانستان میں امن نہ ہونے تک پاکستان بھی حقیقی امن حاصل نہیں کر سکتا۔

وزیراعظم کا کہنا ہے کہ بین الافغان مذاکرات کادور مشکل ہو سکتا ہے جس کیلئے مفاہمت کی فضا درکار ہے ،پاکستان سے زیادہ کسی دوسرے ملک نے افغانستان کے تنازع کی قیمت ادا نہیں کی ،پاکستان نے 40 لاکھ سے زائد افغان مہاجرین کی دیکھ بھال کی ذمہ داری نبھائی ہے ،جنگوں نے ہمارے معاشی راستے کو درہم برہم کردیا ہے ۔

وزیراعظم نے کہاکہ ٹرمپ نے مذاکراتی سیاسی تصفیے کیلئے مدد کی درخواست کی تو کہا ہر ممکن مدد کریں گے،یہاں تک پہنچنے کیلئے جو راستہ طے کیا وہ آسا ن نہیں تھا لیکن ہمت نہیں ہاری،انہوں نے کہاکہ مذاکرات کی میز پر تعطل میدان جنگ میں خونی تعطل سے کہیں زیادہ بہتر ہے، کچھ عناصر افغانستان میں عدم استحکام کو پنے مقاصد کیلئے فائدہ مند سمجھتے ہیں،افغان حکومت نے طالبان کو ایک سیاسی حقیقت کے طور پر تسلیم کیا ہے ،امید ہے کہ طالبان افغانستان کی پیشرفت کو تسلیم کریں گے ۔

وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ افغانستان کو بین الاقوامی دہشتگردی کی پناہ گاہ بنتے نہیں دیکھنا چاہتے ،80ہزار سے زیادہ پاکستانیوں نے دہشتگردی کیخلاف جنگ میں جانوں کی قربانی دی ، پاکستان افغانستان میں قائم بیرونی دہشتگرد گروہوں کے حملوں کانشانہ ہے،یہ دہشتگرد گروہ عالمی امن کیلئے واضح طور پر خطرہ ہے ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -