جگ میں آ     کر اِدھر اُدھر دیکھا  | خواجہ میر درد |

جگ میں آ     کر اِدھر اُدھر دیکھا  | خواجہ میر درد |
جگ میں آ     کر اِدھر اُدھر دیکھا  | خواجہ میر درد |

  

جگ میں آ     کر اِدھر اُدھر دیکھا 

تو ہی آیا نظر جدھر دیکھا 

جان سے ہو گئے بدن خالی 

جس طرف تو نے آنکھ بھر دیکھا

نالہ فریاد آہ اور زاری 

آپ سے ہو سکا سو کر دیکھا 

ان لبوں نے نہ کی مسیحائی 

ہم نے سو سو طرح سے مر دیکھا 

زور عاشق مزاج ہے کوئی 

دردؔ کو قصہ مختصر دیکھا 

شاعر: خواجہ میر درد

 (دیوانِ درد :سال اشاعت،2011)

Jagg   Men   Aa   Kar   Idhsr   udhr   Dekha

Tu   Hi   Aaya   Nazar   Jidhar   Dekha

Jaan    Say    Ho   Gaey    Badan    Khaali

Jiss   Taraf     Tu   Nay    Aankh   Bahr   Dekha

Naala  ,   Faryaad   ,   Aaah-o-Zaari

Aaap   Say   Jo   Ho    Saka   So    Kar   Dekha

Un   Labon    Nay    Na    Ki   Maseehaai

Ham    Nay    Sao    Sao   Tarah   Say    Mar   Dekha

Zor    Ashiq    Mizaaj    Hay    Koi

DARD    Ko    Qissa    Mukhatasar   Dekha

Poet: Khawaja    Meer     Dard

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -