حکومت نے نیا پاکستان بنانے پر پرانے مستری لگا دیے،کراچی کو تینوں بڑی جماعتوں نے مل کر تباہ کیا: سراج الحق

حکومت نے نیا پاکستان بنانے پر پرانے مستری لگا دیے،کراچی کو تینوں بڑی جماعتوں ...
حکومت نے نیا پاکستان بنانے پر پرانے مستری لگا دیے،کراچی کو تینوں بڑی جماعتوں نے مل کر تباہ کیا: سراج الحق

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ جب بھی الیکشن فیئر ہوگا کراچی میں جماعت اسلامی کا میئر ہوگا ۔ کراچی کو تینوں بڑی جماعتوں نے مل کر تباہ کیا،نام نہاد بڑی پارٹیاں آئی ایم ایف ، ورلڈ بنک اور ایف اے ٹی ایف کی غلامی میں ایک ہیں ،کراچی کی ترقی اورخوشحالی پاکستان کی ترقی اور کامیابی ہے،کراچی کے عوام کو اب اپنے مستقبل اور کراچی کو مزید تباہی سے بچانے کے لیےاٹھنا اور چوروں اور لٹیروں سے نجات حاصل کرنا ہوگی،جماعت اسلامی14 اکتوبر کو ملک گیر یوم یکجہتی کراچی منائے گی ،حکومت نے نیا پاکستان بنانے پر پرانے مستری لگا دیے ہیں جن میں سے 13 پیپلز پارٹی 8 مشرف 4 ن لیگ اور باقی ایم کیو ایم اور دوسری پارٹیوں کے ہیں ۔,کراچی منی پاکستان ہے،جب کراچی پریشان ہوتا ہے تو پورا ملک پریشان ہوتا ہے ،کراچی میں ملک کے ہر حصے اور ہر زبان بولنے والے لوگ رہتے ہیں ،کراچی کی کامیابی پاکستان کی کامیابی ہے اور اس کی تباہی پورے ملک کی تباہی ہے ،ایوب خان سے لے کر آج تک کسی حکومت نے کراچی کو اس کا حق نہیں دیا ہے ،صوبائی حکومت اور وفاقی حکومت نے بھی ہمیشہ کراچی کے لوگوں کا استحصال کیا ہے ،موجودہ وفاقی اور صوبائی حکومت بھی کراچی کے ساتھ ناانصافی کررہی ہے ,کراچی میں مردم شماری پر اعتراضات ہیں لیکن وفاقی حکومت نے ابھی تک اعلان کے باوجود مردم شماری کو درست کرنے کے لیے کچھ نہیں کیا ۔کراچی کے حکمران جماعتوں نے اس شہر کو تباہ کیا ہے یہ اسے سنوارنے کی صلاحیت نہیں رکھتے ،صرف جماعت اسلامی ہی مسائل حل کرسکتی ہے , ملک میں کرپشن بڑھ رہی ہے پہلے لوگ ناجائز کاموں کے لیے رشوت دیتے تھے ا ب جائز کاموں کے لیے بھی دینا پڑتی ہے ۔

 کراچی میں ”حقو ق کراچی مارچ“ کے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئےسینیٹر سراج الحق نے کہاکہ وزیراعظم سے کہتاہوں کہ آپ یوٹرن لینے کی بجائے رائٹ ٹرن لیں اور سیدھے راستے پر آ جائیں,حکومت کا معاشی وژن مرغی انڈے اور کٹے کی معیشت سے شروع ہو کر بھنگ پر ختم ہو جاتاہے,حکمران کہتے ہیں کہ بھنگ کی پیداوار میں اضافہ کر کے ملک کو عالمی معاشی قوت بنائیں گے مگر عوام ان کی شیخ چلی والی معاشی پالیسیوںکو مسترد کر چکے ہیں ۔ حکومت کی ایک ہی پالیسی ہے کہ عوام کو نچوڑ ا اور ان کی گردنوں کو مروڑا جائے, ملک کو دیانتدار قیادت اور منظم جماعت کی ضرورت ہے ۔ مجھے جب بھی موقع ملا میں ان لٹیروں کو گھسیٹ کر عوام کی عدالت میں پیش کروں گا اور پھر عوام کا ہاتھ ان ظالموں کا گریبان ہوگا ۔

سینیٹر سراج الحق نے مطالبہ کیا کہ کراچی کی شہری حکومت کو بحال کیا جائے اور میرٹ اور عدل کی بنیاد پر نوجوانوں کو ملازمتیں دی جائیں ,حکومت کے 780 دن ناکامیوں کی داستان ہے , ملکی معیشت کا بیڑا غرق ہوچکا ہے اس حکومت سے قبل پانچ اور چھ کی شرح نمو والی معیشت اب صفر اعشاریہ ایک پر پہنچ چکی ہے جو ملکی تاریخ کی کم ترین شرح ہے,ادویات کی قیمتوں میں 262 فیصد تک اضافہ کردیا گیا ہے ۔ 55 روپے والی چینی 105 روپے فی کلو مل رہی ہے ۔ آٹا چینی دال گھی اور تیل ہر چیز کی قیمتوں میں کئی گنا اضافہ ہوگیا ہے,وزیراعظم کے گرد آٹا ، چینی ، لینڈ اور ڈرگ مافیا ز نے گھیرا ڈال رکھاہے, لوگ کرونا سے بچ گئے مگر مہنگائی اور بے روزگاری کی وجہ سے ذہنی مریض بن گئے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ حکومت ہر شعبہ میں ناکام ہوگئی ہے خارجہ پالیسی کی تباہی کی وجہ سے سقوط کشمیر ہوچکا مگر عوام کو فریب میں مبتلا رکھنے کے لیے حکومت ہوائیفائرنگ کر رہی ہے ,

مزید :

قومی -