یکساں نصاب تعلیم کا معاملہ،وزیر تعلیم سندھ سردا ر علی شاہ کا موقف بھی سامنے آگیا

یکساں نصاب تعلیم کا معاملہ،وزیر تعلیم سندھ سردا ر علی شاہ کا موقف بھی سامنے ...
یکساں نصاب تعلیم کا معاملہ،وزیر تعلیم سندھ سردا ر علی شاہ کا موقف بھی سامنے آگیا

  

عمرکوٹ(سید ریحان شبیر )سندھ کے صوبائی وزیر تعلیم سید سردار علی شاہ نے کہا کہ اٹھارہویں ترمیم کے بعد تعلیم صوبائی سبجیکٹ ہے ’پی ایم سی‘کے معاملے پربھی سندھ کے ہزاروں طالب علموں کےساتھ زیادتی کی گئی وفاقی حکومت صوبوں میں یکساں نصاب مسلط کرنا چاہتی ہے جبکہ صوبہ سندھ میں ہم اپنا سلیبس پڑھارہے ہیں ، اس سلسلے میں وفاقی وزیرتعلیم و ہائر ایجوکیشن شفقت محمود سے رابطہ کرینگے سندھ کے نوجوانوں کی حق تلفی برداشت نہیں کی جائےگی اس سلسلے میں ہمیں سندھ اسمبلی سے ریزولیوشن لانے کی ضرورت پڑی تو ہم ریزولیوشن پاس کریں گے۔

 صوبائی وزیر تعلیم سید سردار علی شاہ نے راجونی اتحاد کے سربراہ سردار غلام مصطفیٰ خاص خیلی کے انتقال پر تعزیت کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ سندھ کے ہزاروں طالب علموں کےساتھ پی ایم سی والوں نے بڑی زیادتی کی ہے انہوں نے کہا کہ اٹھارہویں ترمیم کے بعد تعلیم صوبائی سبجیکٹ ہے لیکن وفاق میں پی ٹی آئی کے ممبران بلا سوچے سمجھے یہ کہہ دیتے ہیں کہ یہ پی ٹی آئی کا منشور ہے۔

سید سردار علی شاہ کا کہناتھا کہ ہم آئین کو مانتے ہیں پی ٹی آئی کے منشور کو نہیں ، محکمہ تعلیم میں43ہزار سے زائد جے ایس ٹی ،پی ایس ٹی ،اساتذہ کی خالصتاً شفاف میرٹ پر بھرتی کے لیے آئی بی اے ٹیسٹ ہوچکے ہیں اس میں جو امیدوار پاس ہونگے انکو آڈر دیے جاینگے بقایا رہ جانےوالے امیدواروں کے حوالے سے ہم غور کررہے ہیں کہ یا تو تین ماہ بعد ٹیسٹ لیے جائیں یا کچھ رعایت دی جائے۔

صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ حتمی فیصلہ ہمیں آئی بی اے کی جانب سے فائنل رزلٹ مل جائے جس کے کوئی جنرل رعایت کا فیصلہ کیاجائے گا مناسب حد تک تھر کوہستان پہاڑی اور سمندری پٹی کی خواتین کو بھی رعایت دی جائے گی۔

مزید :

علاقائی -سندھ -عمرکوٹ -