وزیر اعظم نے کراچی سرکلر ریلوے کا سنگ بنیاد رکھ دیا 

وزیر اعظم نے کراچی سرکلر ریلوے کا سنگ بنیاد رکھ دیا 
وزیر اعظم نے کراچی سرکلر ریلوے کا سنگ بنیاد رکھ دیا 

  

کراچی ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) وزیر اعظم عمران خان نے کراچی سرکلر ریلوے کا سنگ بنیاد رکھ دیا ، تقریب سے خطاب میں کہا کہ کراچی کی ترقی و بہتری کیلئے وفاق اور سندھ کو مل کر چلنا ہوگا ۔

کراچی میں کراچی سرکلر ریلوے ( کے سی آر) کے سنگ بنیاد کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ ترقی یافتہ ممالک میں بھی ایک ہی شہر ہے جو ان کو لیڈ کرتا ہے جیسے انگلینڈ میں لندن ، امریکہ میں نیو یارک ہے ، اسی طرح پاکستان میں کراچی ہے مگر ہم اس کی اہمیت کا پوری طرح اندازہ نہیں لگایاپائے ، 1970کی دہائی میں کراچی تیزی سے ترقی کر رہا تھا جب 1980 کی دہائی میں یہ ٹیک آف کرنے لگا تو یہاں انتشار شروع ہو گیا ، یہ شہر سارے پاکستان کو ساتھ لے کر جا رہا تھا ، کراچی کے مسائل نے پورے ملک کو متاثر کیا ۔

وزیر اعظم نے کہا کہ گزشتہ ستمبر میں ہم نے کراچی کا ٹرانسفارمیشن پلان بنایا جس میں سندھ اور وفاق نے مل کر فیصلہ کیا کہ کراچی کو اٹھائیں گے ، یہ پلان صرف کراچی نہیں پورے پاکستان کیلئے ہوگا، کراچی پوری دنیا سے انویسٹمنٹ کھینچ سکتا ہے جس کیلئے بنیادی انفراسٹریکچر کی ضرورت ہے جس میں ٹرانسپورٹ سب سے اہم ہے ، یہاں اس طرح کی انویسٹمنٹ نہیں ہوئی جیسے ہونی چاہئے تھی ، کے سی آر اس معاملے میں انتہائی اہم قدم ہے جو شہر کی سڑکوں پر ٹریفک کا رش کم کرے گا، اس کے بعد گرین لائن بھی بہت مدد کرے گا۔ 

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ کراچی کا پہلا مسئلہ آبادی ہے ، یہ شہر بہت تیزی سے پھیل رہا ہے ، وزیر اعلیٰ سندھ بھی یہاں موجود ہیں ، پھر کہتا ہوں کہ بنڈل آئی لینڈ کا فائدہ سندھ کو ہے، نوکریاں سندھ کو ملیں گی اور اس سے کراچی سے پریشر اتر گا۔ بنڈل آئی لینڈ  پر باہر سے انویسٹمنٹ آنے کو تیار ہے ، سب سے بڑ ا پاکستان کا اثاثہ اوور سیز پاکستانی ہیں ، ان کے پاس ڈالرز پڑے ہیں ، جس کی ہمیں ضرورت ہے ، ڈالرز آئیں گے تو ہم اپنی کرنسی کو متوازن کریں ۔ لاہور شہر کو بچانے کیلئے ہم راوی سٹی کا پراجیکٹ لا رہے ہیں،شہر پر اتنا پریشر ہے کہ ابھی سے پلاننگ نہ کی تو ان کے مسائل بے حدبڑھ جائیں گے ۔

ان کا کہنا تھا کہ کراچی کا دوسرا مسئلہ پانی کا ہے ، یہاں آنے سے قبل چیئرمین واپڈا سے معاملے پر بریفنگ لی تھی ، شہر کراچی میں دو سال تک پانی کی نعمت پہنچ جائے گی ، کراچی کے دیگر مسائل کیلئے وفاقی حکومت اور سندھ حکومت کو مل کر چلنا پڑے گا، دونوں کی رضا مندی کے بغیر عوامی مسائل حل نہیں ہوں گے ۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ہمارے منصوبے مکمل کرنے پر عوام حیران ہیں کیوں کہ انہیں صرف منصوبوں کے اعلانات سننے کی عادت ہے ، بڑے پراجیکٹس اس لئے مکمل نہیں ہوتے کیونکہ ایک حکومت کے پاس اور بھی بہت سے مسائل ہوتے ہیں ، وہ یکسوئی سے ایک ہی پراجیکٹ پر کام نہیں کر پاتی ،کبھی یہ منصوبے منسٹریز میں پھنس جاتے ہیں تو کبھی کچھ اور مسائل پیش آتے ہیں ۔کے سی آر پر سندھ حکومت اور وفاق کو پوری طرح زور لگانا پڑے گا کیونکہ ا س میں مسائل بھی آئیں گے ، یہ 200ارب کا بہت بڑا پراجیکٹ ہے ، وفاقی حکومت اس پر پوری طرح پر عزم ہے اور سندھ حکومت سے بھی ہر قدم پر ساتھ کی توقع ہے ۔

مزید :

اہم خبریں -