حکومت کا بدتمیز سیاسی مخالف کارکنوں کیخلاف قانونی چارہ جوئی کا فیصلہ ، نجی ٹی وی کا دعویٰ

حکومت کا بدتمیز سیاسی مخالف کارکنوں کیخلاف قانونی چارہ جوئی کا فیصلہ ، نجی ...
حکومت کا بدتمیز سیاسی مخالف کارکنوں کیخلاف قانونی چارہ جوئی کا فیصلہ ، نجی ٹی وی کا دعویٰ

  

 لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان مسلم لیگ (ن )نے لندن میں وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب سے  پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی )کارکنوں کی بدتمیزی جیسے واقعات کی آئندہ روک تھام کیلئے جارحانہ حکمت عملی اپنانے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔

نجی ٹی وی "ایکسپریس نیوز "کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن) کی جانب سے اراکین اسمبلی کو   خفیہ خط ارسال کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ بدتمیزی، ہلڑ بازی، راستہ روکنے اور آوازیں کسنے والوں کی موقع پر ویڈیوز بنائی جائیں اور بدتمیزی کرنے والوں کی ویڈیوز سے شناخت کے لئے نادار سے مدد لی جائے اور ان کیخلاف قانونی کارروائی بھی کی جائے۔

نجی ٹی وی نے پارٹی ذرائع  کے حوالے سے بتایا کہ بدتمیزی کرنے والوں کے قومی شناختی کارڈ اور پاسپورٹ سمیت دیگر شناختی و قومی دستاویزات معطل کرنے پر بھی پارٹی غور کرے گی ، پارٹی کے لیگل ونگز کو بدتمیز مخالف سیاسی کارکنوں کیخلاف قانونی کارروائی میں ہر ممکن ساتھ دینے کی ہدایات جاری کر دی گئی ہیں ،جب کہ وفاقی وزارت داخلہ مسلم لیگ ن کے اراکین و پارٹی عہدیداروں سے بدتمیزی کرنے والوں کیخلاف قانونی کارروائی میں بھرپور مدد کرے گی۔

رپورٹ کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن )نے وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب سے لندن میں پی ٹی آئی کارکنوں کی بدتمیزی جیسے واقعات کی روک تھام کیلئے جارحانہ حکمت عملی تیار کرلی اور خواتین اراکین اسمبلی سمیت پارٹی عہدیداروں و اراکین پارلیمان کو خفیہ ہدایت نامہ جاری کیا گیا ہے، پارٹی کی جانب سے جاری ہدایت نامے میں کہا  گیا ہے کہ اراکین اسمبلی اور پارٹی عہدیداروں سے کوئی بھی مخالف سیاسی جماعت کا کارکن بدتمیزی، ہلڑ بازی، ہوٹنگ کرے یا راستہ روکے تو اس کا سختی سے موقع پر ہی جواب دیا جائے،موقع پر سخت جواب نہ دینے سے مخالفین کے حوصلے مزید بلند ہوتے ہیں اور ایسے واقعات میں اضافہ ہوتا ہے لہذا بدتمیز مخالف سیاسی کارکنوں سے اب انہی کی زبان میں بات کی جائے۔

ہدایت نامے میں کہا گیا ہے کہ کوشش کی جائے کہ عوامی مقامات پر اکیلے نہ جایا جائے، خصوصا خواتین اراکین اسمبلی و پارٹی عہدیدار اس ہدایت نامے پر سختی سے عملدرآمد کریں۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -