عمر کوٹ،ہاسٹلز سے موبائل چوری معمول بن گیا، پرائیویٹ ہاسٹل ایسویسی ایشن کی حکام سے نوٹس کی اپیل

عمر کوٹ،ہاسٹلز سے موبائل چوری معمول بن گیا، پرائیویٹ ہاسٹل ایسویسی ایشن کی ...
عمر کوٹ،ہاسٹلز سے موبائل چوری معمول بن گیا، پرائیویٹ ہاسٹل ایسویسی ایشن کی حکام سے نوٹس کی اپیل

  

عمرکوٹ(سید ریحان شبیر)پرائیویٹ ہاسٹل ایسوسی ایشن کے رہنماؤں محمد ابراہیم کمبار ،نعیم درس ،رحیم موچارو منگریو ،کیلاش کمار نے پریس کلب عمرکوٹ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ عمرکوٹ کے پرائیویٹ ہاسٹلز میں موبائل چور سرگرم عمل ہیں، پولیس موبائل چور مافیا کی خلاف کسی بھی قسم کا ایکشن لینے کیلئے تیار نہیں ہے ۔

تفصیلات کے مطابق  پرائیویٹ ہاسٹل ایسوسی ایشن کے رہنماؤں کا کہنا تھا کہ ہاسٹلز میں طالب علموں کے موبائل چوری ہونا معمول کی بات ہوگی ہے پولیس موبائل چور مافیا کے خلاف کسی بھی قسم کا ایکشن لینےکے تیار نہیں ہے ، عمرکوٹ میں دو درجن سے زائد ہاسٹل کام کررہے ان ہاسٹل میں عمرکوٹ سمیت سندھ کےمختلف شہروں سے تعلق رکھنے والے بچے مقیم ہیں ۔

کچھ وقت سے عمرکوٹ میں ایک منظم موبائل چور گروہ سرگرم ہے موبائل چور گروہ کےباعث طالب علم اور ہاسٹل نگران پریشان ہے پریس کانفرنس میں ہاسٹل ایسوسی ایشن کے رہنماؤں نے کہا کہ ہم نےاپنی مدد آپ دو موبائل چوری میں ملوث افراد کا پتہ لگاکر ان مبینہ طورپر دو موبائل برآمد بھی ہوئے ہم اس پریس کانفرنس کےذریعے ایس پی عمرکوٹ اور دیگر سیکورٹی کے اداروں سے اپیل کرتے ہیں کہ ان موبائل چوروں سمیت جرائم پیشہ عناصر کےخلاف بھرپور آپریشن کیاجائے ۔

مزید :

علاقائی -سندھ -عمرکوٹ -