'گوشت خور مردوں کے ساتھ جنسی تعلق کی ہڑتال کی جائے' موسمیاتی تبدیلی پر قابو پانے کیلئے انوکھی تجویز

'گوشت خور مردوں کے ساتھ جنسی تعلق کی ہڑتال کی جائے' موسمیاتی تبدیلی پر قابو ...
'گوشت خور مردوں کے ساتھ جنسی تعلق کی ہڑتال کی جائے' موسمیاتی تبدیلی پر قابو پانے کیلئے انوکھی تجویز
سورس: PETA

  

واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن) جانوروں کے حقوق کے عالمی گروپ پیٹا (پیپل فار دی ایتھیکل ٹریٹمنٹ آف اینیملز) نے موسمیاتی تبدیلی سے نمٹنے کے لیے ایک انوکھا آئیڈیا پیش کردیا.  تنظیم نے گوشت کھانے والے مردوں کے ساتھ جنسی تعلقات پر ہڑتال کا مطالبہ کیا ہے۔

 ایک بلاگ پوسٹ میں، پیٹا نے لکھا، "ہم سب ان کو جانتے ہیں، وہ مضافاتی مرد جن کے ہاتھ میں بیئر کی بوتلیں ہیں، اپنی مہنگی گیس گرلز پر ساسیج پکاتے ہوئے چمٹے مار رہے ہیں۔ ان باربی کیو ماسٹرز کو یقین ہے کہ وہ اپنی مردانگی کو خود پر ثابت کر سکتے ہیں۔ ان کے ساتھی انسان اپنے گوشت کے استعمال سے نہ صرف جانوروں کو نقصان پہنچا رہے ہیں بلکہ کرہ ارض کو بھی نقصان پہنچا رہے ہیں۔"

پیٹا نے جریدے PLOS ONE میں شائع ہونے والی ایک تحقیق کا حوالہ دیتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ خواتین کے مقابلے مرد "آب و ہوا کی تباہی" میں نمایاں طور پر زیادہ حصہ ڈالتے ہیں۔ پیٹا نے دعویٰ کیا کہ گوشت کھانے والے مرد گرین ہاؤس گیسوں میں 41 فیصد زیادہ حصہ ڈالتے ہیں۔

پیٹا نے کہا، "یہی وجہ ہے کہ پیٹا نے گوشت کھانے والے مردوں کے ساتھ جنسی تعلقات پر ہڑتال کی تجویز پیش کی ہے تاکہ انہیں سبزی خوری  پر آمادہ کیا جا سکے۔"

مزید :

ڈیلی بائیٹس -