الکرمہ شہر کا 90 فی صد حصہ شدت پسندوں سے آزاد کرلیا ہے‘ خالد العبیدی

الکرمہ شہر کا 90 فی صد حصہ شدت پسندوں سے آزاد کرلیا ہے‘ خالد العبیدی

بغداد ( آن لائن )عراق کے وزیر دفاع خالد العبیدی نے دعویٰ کیا ہے کہ سیکیورٹی فورسز نے صوبہ دیالی کے فلوجہ شہر سے متصل الکرمہ شہر کا نوے فی صد علاقہ شدت پسندوں سے آزاد کرلیا ہے۔العربیہ ٹی وی کے مطابق بغداد میں ایک نیوز کانفرنس کے دوران مسٹر العبیدی نے بتایا کہ فوج نے اپنے نقشے اور پلان کے مطابق الکرمہ شہر میں بھرپور کارروائی کرکے نوے فی صد اہداف حاصل کرلیے ہیں جس کے بعد اب فلوجہ کو شدت پسندوں سے آزاد کرانے کا راستہ ہموار ہوگیا ہے۔وزیر دفاع نے بتایا کہ شدت پسندوں کی جانب سے الکرمہ شہر میں شمالی رمادی کے قریب ’’ناظم تقسیم‘‘ کے مقام پر چوبیس اپریل کو دہشت گردی کی ایک کارروائی کی تھی جس میں تین کار بم دھماکیے گئے جس کے نتیجے میں 13 سیکیورٹی اہلکار ہلاک ہوگئے تھے۔خالد العبیدی کا کہنا تھا کہ سیکیورٹی فورسز نے بھرپور کارروائی کرکے ناظم تقسیم کو بھی شدت پسندوں سے چھڑالیا ہے اب پورے شہر میں شدت پسند صرف ایک کلو میٹر کے علاقے میں محدود ہو کر رہ گئے ہیں۔

وزیردفاع نے کہا کہ ہماری بہادر افواج کو مورال کو کمزور کرنے اور عزم توڑنے کے لیے نفیساتی جنگ اور گمراہ کن میڈیا پروپیگنڈہ کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سوشل میڈیا پر ایک مخصوص گروپ عراقی فوج پر عام شہریوں کے اجتماعی قتل عام کی جعلی تصاویر پوسٹ کرکے فوج کو بدنام کررہا ہے تاہم دہشت گردوں اور انتہا پسندوں کی فوج کو بدنام کرنے کی سازشیں کامیاب نہیں ہوں گی۔انہوں نے بتایا کہ سوشل میڈیا پر شدت پسندوں کی جانب سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ انہوں نے ناظم ثرثار کے مقام پر کامیاب حملہ کیا ہے جو کہ غلط اور بے بنیاد ہے۔ ناظم ثرثار ناظم تقسیم کے مقام سے اٹھائیس کلو میٹر دور ہے اور یہ جگہ عراقی سیکیورٹی فورسز کے مکمل کنٹرول میں ہے۔

مزید : عالمی منظر