زندہ لاشیں کہنے کی غلطی کااعتراف کرلیا،بھتے کے بعد پہلی مرتبہ لوگ کراچی کے عوام کے پاس ووٹ لینے گئے: عمران خان

زندہ لاشیں کہنے کی غلطی کااعتراف کرلیا،بھتے کے بعد پہلی مرتبہ لوگ کراچی کے ...
زندہ لاشیں کہنے کی غلطی کااعتراف کرلیا،بھتے کے بعد پہلی مرتبہ لوگ کراچی کے عوام کے پاس ووٹ لینے گئے: عمران خان

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کراچی کے عوام کو زندہ لاشیں کہنے پر اپنی غلطی کااعتراف کرلیا اور کہاہے کہ وہ الطاف حسین کے پی ٹی آئی خواتین کے بارے میں بیان پر غصے میں تھے ، پہلی بار ایسا ہواہے کہ لوگ عوام کے پاس بھتے کے لیے نہیں بلکہ ووٹ مانگنے گئے ہیں ، پولیس خود ڈرتی ہے ، رینجرز کی وجہ سے پی ٹی آئی رہنماءکراچی میں متحدہ کیخلاف کھڑے ہونے کے باوجود بچ نکلنے میں کامیاب ہوگئے ،یمن کے معاملے میں پاکستان نے اہم موقع گنوادیا۔

نجی ٹی وی چینل کو دیئے گئے انٹرویو میں عمران خان نے کہاہے کہ کراچی کے عوام ڈرتے ہیں ، خفیہ طورپر سروے کراکردیکھ لیں ، نصیر اللہ بابر آپریش میں حصہ لینے والے تمام پولیس اہلکار مارے گئے ، پولیس خود ڈرتی ہے ، عوام تواب پی ٹی آئی کی شکر گزار ہے کہ پہلی مرتبہ کسی مثبت کام کیلئے اُن سے رابطہ کیاگیا۔

سوالات کے جوابات میں عمران خان کاکہناتھاکہ دھاندلی کی تحقیقات کیلئے تشکیل دیئے گئے جوڈیشل کمیشن کا توقع کے خلاف بھی نتیجہ آیا تو دھرنانہیں دیں گے ، نوازشریف کو کبھی گالی نہیں دی البتہ 30اگست کی رات کو تشدد کا سامناکرنے کے بعد ’اوئے نوازشریف‘ ضرور کہا، اربوں ڈالر بیرون ملک منتقل کرنے کی باتیں گالی میں شمار نہیں ہوتیں ۔اُن کاکہناتھاکہ یمن کی صورتحال میں پاکستان کے پاس سنہری موقع تھا اور اپنا زبردست مقام بناسکتاتھالیکن بدقسمتی سے پارلیمنٹ کی قراردادوں کے باوجود حکومت غیرجانبدار نہیں رہی ،حکومتی ذمہ داران کے بیانات آپ کے سامنے ہیں اور ان سے بخوبی اندازہ لگایاجاسکتاہے کہ حکومت پاکستان کس مقام پر کھڑی ہے ۔

مزید : قومی /Headlines