بچے کی ناک پر سوجن، خاندان والے مچھر کا کاٹنا وجہ سمجھتے رہے لیکن دراصل یہ کیا تھا؟ حقیقت جان کر تمام والدین ہمیشہ احتیاط کرنے پر مجبورہوجائیں

بچے کی ناک پر سوجن، خاندان والے مچھر کا کاٹنا وجہ سمجھتے رہے لیکن دراصل یہ ...
بچے کی ناک پر سوجن، خاندان والے مچھر کا کاٹنا وجہ سمجھتے رہے لیکن دراصل یہ کیا تھا؟ حقیقت جان کر تمام والدین ہمیشہ احتیاط کرنے پر مجبورہوجائیں

  

لندن (نیوز ڈیسک) جسم پر نمودار ہونے والے دانوں یا سوجن کو عموماً یہ سوچ کر نظر انداز کردیا جاتا ہے کہ کچھ دنوں میں یہ خود ہی ٹھیک ہوجائیں گے، لیکن اس برطانوی بچے کے ساتھ پیش آنے والا واقعہ ہمیں خبردار کرتا ہے کہ یہ علامات خوفناک بیماری کا اشارہ بھی ہو سکتی ہیں۔

اخبار ڈیلی میل کے مطابق برطانوی علاقے وورسیسٹر شائر سے تعلق رکھنے والے 11 سالہ لڑکے میتھیو کرک کی ناک پر ایک ننھا سا ابھار نمودار ہوگیا۔ میتھیو اپنے دوستوں کے ساتھ سیر کے لئے گیا تھا اور اس کا خیال تھا کہ اس کی ناک پر مچھر نے کاٹا ہے۔ میتھیو کے والدین بھی شروع میں یہی سمجھتے رہے کہ مچھر کے کاٹنے کی وجہ سے ابھار بن گیا تھا، لیکن یہ ابھار رفتہ رفتہ بڑھتا گیا اور دو ہفتے میں اس کی جسامت ٹینس کی گیند کے برابر ہوچکی تھی۔

خاتون کی کمر پر 2سال سے موجود دانا، ڈاکٹر نے کاٹا تو اندر سے کیا نکلا؟ دیکھ کر خود بھی گھبرا کر رہ گئی

یہ صورتحال دیکھ کر میتھیو کے والدین اسے ہسپتال لے گئے، جہاں یہ خوفناک انکشاف ہو گیا کہ بچے کو ”ایلویولر ریبڈو مایو سارکوما“ نامی کینسر ہوچکا تھا۔ یہ کینسر بہت ہی محدود پیمانے پر پایا جاتا ہے اور ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ برطانیہ میں ہر سال اس کے تقریباً 10 مریض دیکھنے میں آتے ہیں۔

چونکہ برطانیہ میں اس کینسر کے علاج کی سہولت دستیاب نہ تھی لہٰذا میتھیو کو امریکا لیجایا گیا، جہاں ڈاکٹروں نے پروٹون بیم تھیراپی کے ذریعے میتھیو کے کینسر کا علاج شروع کردیا۔ یہ علاج تقریباً 9ہفتوں تک جاری رہا، جس کے بعد میتھیو کی حالت کافی بہتر ہوگئی اور اسے برطانیہ واپس بھیج دیا گیا۔ برطانیہ پہنچنے کے بعد بھی اس کی کیموتھیراپی جاری رکھی گئی اور بالآخر تقریباً ایک سال بعد ڈاکٹروں نے اسے کینسر سے مکمل طور پر محفوظ قرار دے دیا۔

میتھیو کی والدہ جوآن کرک ، جو کہ ریاضی کی ٹیچر ہیں، کا کہنا ہے کہ ان کے بیٹے کا کینسر ناک سے آنکھوں کی طرف پھیل رہا تھا، اور علاج میں تاخیر کے نتائج تباہ کن ہو سکتے تھے۔ وہ کہتی ہیں کہ ایک ماں کے طور پر وہ سب والدین کو کہیں گی کہ اپنے بچوں کے جسم پر نمودار ہونے والی کسی بھی علامت کو معمولی مت جانیں اور فوری طور پر ڈاکٹر سے مشورہ کریں، کیونکہ بظاہر معمولی نظر آنے والا مسئلہ آپ کے بچے کی جان کے لئے خطرہ بھی ثابت ہوسکتا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -