قتل کے 2مختلف مقدمات کا فیصلہ ،3مجرموں کو سزائے موت اور جرمانے

قتل کے 2مختلف مقدمات کا فیصلہ ،3مجرموں کو سزائے موت اور جرمانے

  

لاہور(نامہ نگار)سیشن کورٹ نے قتل کے 2مختلف مقدمات میں جرم ثابت ہونے پر 3مجرموں کو سزائے موت اور جرمانے کی سزا کا حکم سنا دیا ہے ۔ایڈیشنل سیشن جج عامرشہباز میر کی عدالت میں تھانہ باٹا پور پولیس نے تین ملزمان اقبال عرف بالا، اعجاز عرف ججی اور ایاز کے خلاف رضوان عرف گوشی کو قتل کرنے کے الزام میں چالان پیش کررکھا تھا،چالان عدالت میں آنے پر فاضل جج نے مقدمے کی باقاعدگی سے سماعت کی ،گزشتہ روز عدالت نے اقبال عرف بالا اور ایاز پر جرم ثابت ہونے پر دونوں کو سزائے موت اور 5،5لاکھ روپے جرمانے کی سزا کا حکم سنا دیا ہے ،مذکورہ کیس میں ایک ملزم اعجاز عرف ججی مفرور ہے جس کا کیس اس کی گرفتاری کے بعد چلایا جائے گا۔ استغاثہ کے مطابق مجرموں کیس کی پیروی کرنے کی رنجش پر فائرنگ کرکے رضوان عرف گوشی کو قتل کردیا تھاجس پر ان کے خلاف تھانہ باٹا پورپولیس نے 2010ء میں مقدمہ درج کیا تھا۔دریں اثناء ایڈیشنل سیشن جج شازب سعیدنے چھرہ کے محمدرمضان کوقتل کرنے کے جرم میں مجرم شہباز کو سزائے موت اور 2لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنا کا حکم سنا دیا ہے۔

جبکہ مقدمہ میں شریک ایک ملزم خالد محمود کو بری کردیاہے۔عدالت میں تھانہ اچھرہ پولیس نے دو سگے بھائیوں شہباز اور خالد محمود کے خلاف قتل کاچالان پیش کررکھا تا،جس میں اعجاز احمد کو رقم کے لین دین پر قتل کرنے کا الزام تھا،عدالت میں یہ چالان 2000ء میں پیش کیا گیا تھا،عدالت نے دوران سماعت وکلا کے دلائل اورگواہوں کے بیانات کی روشنی میں جرم ثابت ہونے پر مجرم شہباز کو سزائے موت اور2لاکھ روپے جرمانے کی سزا کا حکم سنا دیا ہے جبکہ مقدمہ میں شریک دوسرے بھائی خالد محمود کو شک کا فائدہ دے کر بری کردیاہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -