عمر رسیدہ بہنوں سے اراضی ہتھیانے کا ٹرائل عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار

عمر رسیدہ بہنوں سے اراضی ہتھیانے کا ٹرائل عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے عمر رسیدہ بہنوں سے اراضی ہتھیانے کا ٹرائل عدالت کا فیصلہ کالعدم قراردے دیا۔ عدالت نے غلط فیصلہ کرنے والے متعلقہ سول جج کے خلاف کارروائی کا حکم دیاہے۔جسٹس محمد خالد محمود خان نے کیس کی سماعت شروع کی تو درخواست گزار نذیراں بی بی اور شمیم نے عدالت کو آگاہ کیا کہ رحمت علی نامی شخص نے جعل سازی سے ان کی زمین کسی تیسرے شخص کے نام لگا دی۔ ٹرائل عدالت نے حقائق اور قوانین کے خلاف کیس کا فیصلہ سنایا جس سے وہ اپنی کروڑوں روپے کی 18کنال آبائی اراضی سے محروم ہو گئیں۔ رحمت علی نے عدالت کو بتایا کہ انہوں نے دونوں بہنوں سے اراضی خریدی جبکہ زمین کی مالیتی 50لاکھ کی رقم عدالت میں جمع کرائی۔ عدالت نے درخواست نمٹاتے ہوئے ٹرائل عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے ماتحت عدالت کے غلط فیصلہ کرنے والے متعلقہ سول جج کے خلاف کارروائی کرکے سیشن جج سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

مزید :

علاقائی -