نیب کی طرف سے شروع کردہ انکوائری کیخلاف دائردرخواست پر تفتیشی افسر کو 9 مئی کو ریکارڈ سمیت پیش ہونے کا حکم

نیب کی طرف سے شروع کردہ انکوائری کیخلاف دائردرخواست پر تفتیشی افسر کو 9 مئی ...

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے ناجائز اثاثوں کے الزام پر نیب کی طرف سے شروع کردہ انکوائری کے خلاف دائردرخواست پر نیب کے تفتیشی افسر کو 9 مئی کو ریکارڈ سمیت پیش ہونے کا حکم دے دیا، جسٹس محمود مقبول باجوہ کی سربراہی میں قائم دو رکنی بنچ نے یہ حکم اویس بہرام کی درخواست پر جاری کیا ہے، درخواست گزار نے موقف اختیار کیا گیاتھاکہ وہ فیصل آباد کے ایک کاروباری خاندان سے تعلق رکھتاہے جبکہ ان کی والدہ راحیلہ بلوچ رکن قومی اسمبلی رہ چکی ہیں، ان کے پاس تمام اثاثوں کے ثبوت موجود ہیں لیکن اس کے باوجود نیب نے سیاسی مخالفین کے کہنے پر ان کے خلاف انکوائری شروع کر رکھی ہے اور انہیں ہراساں کیا جا رہا ہے، انہوں نے استدعا کی کہ نیب کو درخواست گزار اور اس کے خاندان کو ہراساں کرنے سے روکا جائے اور نیب کی طرف سے طلبی کے نوٹسز معطل کئے جائیں، عدالت نے نیب کے تفتیشی افسر کو9 مئی کو ریکارڈ سمیت طلب کر لیاہے۔

مزید :

علاقائی -