افغانستان طالبان نے مصالحتی وفد پاکستابن بھجوانے کی تصدیق کر دی

افغانستان طالبان نے مصالحتی وفد پاکستابن بھجوانے کی تصدیق کر دی

  

 اسلام آباد (این این آئی)افغان طالبان نے مذاکرات کیلئے اپنا ایک وفد پاکستان بھجوانے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغان عوام کے پاکستان کے ساتھ دیرینہ تعلقات ہیں اور پاکستانی حکام سے ملا برادر کی رہائی کی بات کی جائے گی۔بدھ کو افغان طالبان کے قطر دفتر سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا کہ اسلامی امارت نے اپنا ایک وفد اسلام آباد بھجوانے کا فیصلہ کیا ہے۔افغان طالبان نے ایسے وقت اپنا وفد پاکستان بھجوانے کی تصدیق کی کہ جب گذشتہ ہفتے کابل میں ہونے والے خودکش دھماکے کے بعد افغان صدر اشرف غنی نے طالبان سے بھرپور مقابلے کا عندیہ دیا تھا۔ذرائع کے مطابق قطر میں مقیم افغان طالبان کا ایک وفد افغان حکومت سے براہ راست بات چیت کے لیے منگل کو کراچی پہنچا تھا تاہم پاکستان کے دفترخارجہ نے اس سے لاعلمی کا اظہار کیا تھا۔طالبان کے قطر میں موجود دفتر سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا کہ وفد پاکستانی حکام سے افغان طالبان کے رہنما ملا برادر سمیت جیل میں قید دیگر افراد کی رہائی کیلئے بات کرے گا۔اپنے بیان میں انھوں نے کہا کہ طالبان کا وفد پاکستانی حکام سے افغان مہاجرین اور سرحدی علاقوں کے مسائل پر بھی بات کریگا۔بی بی سی کے ذرائع کے مطابق قطر سے آنے والے افغان طالبان کے وفد میں ملا شہاب الدین دلاور اور ملا جان محمد شامل ہیں، جبکہ کچھ طالبان رہنما پاکستان سے اس مصالحتی عمل میں افغان حکومت کے ساتھ مذاکرات میں شریک ہوں گے۔بیان میں کہا گیا کہ انھیں توقع ہے کہ یہ دورہ دونوں ملکوں کے مفاد میں نتیجہ خیز ثابت ہو گا۔

افغان طالبان

مزید :

راولپنڈی صفحہ اول -