چارسدہ ،ٹی ایم اے میں 22 کروڑ روپے کے منصوبوں میں ہیر پھیری

چارسدہ ،ٹی ایم اے میں 22 کروڑ روپے کے منصوبوں میں ہیر پھیری

  

چارسدہ (بیورو رپورٹ) ٹی ایم اے چارسدہ میں 22کروڑ روپے کے ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے ہیرا پھیری اور من پسند افراد کو ٹھیکے دینے کے خلاف جماعت اسلامی ،قومی وطن پارٹی ،تحریک انصاف اور جمعیت علمائے اسلام کے منتخب بلدیاتی نمائندے سراپا احتجاج بن گئے ۔ صوبائی حکومت ،نیب اور انٹی کرپشن سے فوری انکوائری کرنے اور ذمہ داروں کے خلاف قانونی کاروائی کا مطالبہ ۔ مروجہ قانون کے مطابق ترقیاتی منصوبوں کے لئے دو بارہ ٹینڈر جاری کرنے کا مطالبہ ۔ تفصیلات کے مطابق تحصیل کونسل چارسدہ میں اپو زیشن لیڈر خیر محمد خان،ہارون خان ،تحریک انصاف کے صدیق خان ،قومی وطن پارٹی کے کرامت شاہ اور جمعیت علمائے اسلام کے مولانا تحمید اللہ نے تحصیل کونسل کے دیگر اراکین کے ہمراہ ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے الزام لگایا کہ تحصیل ایڈمنسٹریٹر نے 29مارچ کو دیگر حکام سے مل کر 22کروڑ روپے کے ترقیاتی فنڈزکے حوالے سے ہیرا پھیری کی اور چار من پسند افراد کو ٹھیکے دئیے جو کہ مروجہ قانون اور پالیسی کی کھلی خلاف ورزی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ تحصیل ایڈ منسٹریٹر کی من مانیوں کی وجہ سے 200ٹھیکہ داروں کی حق تلفی ہوئی ہے کیونکہ اندرون خانہ ٹھیکے تقسیم کرکے 200ٹھیکہ داروں کو مقابلے سے باہر رکھا گیا ۔ انہوں نے کہاکہ 22کروڑ روپے کے ترقیاتی کاموں کیلئے کوئی اشتہار تک نہیں دیا گیا ۔انہوں نے صوبائی حکومت ،نیب ،انٹی کرپشن ،ڈپٹی کمشنر اور ضلع ناظم سے اس حوالے سے فوری طور نوٹس لینے اور شفاف انکوائری کا مطالبہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ غیر قانونی ٹھیکوں کے خلاف احتجاج غیر معینہ مدت تک جاری رہیگا اور اس حوالے سے احتجاجی مظاہروں سمیت ہر فورم پر آواز اٹھایا جائیگا۔ انہوں نے کہاکہ عوام نے ہمیں ووٹ دیا ہے اور کسی صورت عوام کے حقو ق پر کسی کو ڈاکہ ڈالنے کی اجازت نہیں دینگے ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -