پاناما کا ہنگامہ،حکومت نے قوم کے لاکھوں روپے اشتہارات پر اڑا دیئے،نئی بحث چھڑ گئی

پاناما کا ہنگامہ،حکومت نے قوم کے لاکھوں روپے اشتہارات پر اڑا دیئے،نئی بحث ...
پاناما کا ہنگامہ،حکومت نے قوم کے لاکھوں روپے اشتہارات پر اڑا دیئے،نئی بحث چھڑ گئی

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)پاناما لیکس پرہونے والے ہنگاموں اورالزام تراشیوں کے بعد آئی سی آئی جے کی جانب سے میڈیا میں آنے والی مبینہ وضاحت اور اس سے اگلے روز تردید کی خبروں اور اس پر ردعمل نے ملک بھر میں ایک نئی بحث کو جنم دیدیا ہے۔

مسلم لیگ کے عہدیداروں نے گزشتہ روز آئی سی آئی جے کی جانب سے دی گئی مبینہ وضاحتوں جو کہ ”روزنامہ جنگ“ اور ”دی نیوز“میں شائع ہوئی تھیںکی بنیاد پر تحریک انصاف کو خوب لتاڑا تو اگلے ہی روز حکومت پاکستان کی جانب سے لاکھوں روپے کے اشتہارات اخبارات میں شائع کرائے گئے ۔جن پر مختلف حلقوں ،میڈیا چینلز اورسماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر کوب تنقید کی گئی۔

نجی ٹی وی اے آر وائی کے مطابق حکومتی شخصیات کی عوامی پیسوں سے تشہیرسپریم کورٹ کے احکامات کی کھلی خلاف ورزی ہے۔سپریم کورٹ نے سرکاری خزانہ سے حکومتی شخصیات کی تشہیر پر پابندی عائد کر رکھی ہے لیکن سپریم کورٹ کے احکامات کے باوجود وزیراعظم نواز شریف اوروزیراعلیٰ شہباز شریف کی تصاویر والے اشتہارات اخبارات کی زینت بن رہے ہیں۔حکومت نے قوم کے لاکھوں روپے اشتہارات پر اڑا دیئے۔مختلف اخبارات میں پاناما لیکس سے متعلق وضاحتی خبروں کی بنیاد پر لاکھوں روپے کے اشتہارات اخباروں کے صفحہ اول کی زینت بنے ۔اے آر وائی کے مطابق ذات اور خاندان پر لگے الزامات کی صفائی دینے کیلئے حکومت نے عوامی پیسے کا استعمال کیا ۔اینکر پرسن کاشف عباسی نے اس کو نہ صرف قانونی بلکہ اخلاقی اقدار کی پامالی بھی قرار دیا۔انہوںنے کہایہ اشتہار کسی بھی منسٹر یا لیگی کارکن کی جانب سے چلائے جا سکتے تھے۔ایک سوال کے جواب میں انہوںنے کہاا گروزیراعظم نے خود سے ادائیگی کی ہوتی تواشتہارات کے آخر میںحکومت پاکستان کے بجائے نواز شریف لکھا ہوتا۔

مزید :

اسلام آباد -